بدعنوانی کے خاتمہ کیلئے قانون  میں خامیاں دور کرنیکی ضرورت ہے،صدر مملکت 

  بدعنوانی کے خاتمہ کیلئے قانون  میں خامیاں دور کرنیکی ضرورت ہے،صدر مملکت 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 اسلام آباد (این این آئی)صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ پاکستان نے اقوام متحدہ کے انسداد بدعنوانی کے کنونشن سمیت بدعنوانی کی روک تھام کیلئے بین الاقوامی کنونشنز پر موثر عملدرآمد کیلئے کئی اقدامات کئے ہیں، ہمیں ملک میں بدعنوانی کے خاتمہ کیلئے قانون کے جائزہ اور اس پر سختی سے عمل پیرا ہو کر اپنے نظام کی خامیوں کو دور کرنے کی ضرورت ہے، پوری قوم کو متحد ہو کر اس برائی کے خلاف جہاد میں حکومت کا ساتھ دینا چاہئے تاکہ ہمارے معاشرے کو بدعنوانی سے پاک کیا جا سکے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے انسداد بدعنوانی کے عالمی دن کے موقع پر پیغام میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ 9 دسمبر کو انسدا دبدعنوانی کا عالمی دن منایا جاتاہے جس کا مقصد بدعنوانی کے چیلنج سے نمٹنا ہے، ہم آج کے دن نظم و نسق کے نظام سے بدعنوانی کے خاتمے،شفافیت اور احتساب کے فروغ کے عزم کا اعادہ کرتے ہیں۔کرپشن کے ناسور سے نمٹنے کیلئے پاکستان نے سخت احتساب کے نظام پر عمل کرتے ہوئے موثر اقدامات کئے ہیں۔جس سے بدعنوانی کی لعنت کی روک تھام میں مدد ملی ہے۔ہمیں ملک میں بدعنوانی کے خاتمہ کیلئے قانون کے جائزہ اور اس پر سختی سے عمل پیرا ہو کر اپنے نظام کی خامیوں کو دور کرنے کی ضرورت ہے۔صدر مملکت نے امید ظاہر کی کہ اگر ہم ملکر کام کریں گے تو ہم اپنی آنے والی نسلوں کیلئے معاشی طور پر مضبوط اور کرپشن فری پاکستان بنا سکتے ہیں۔
بدعنوانی کا خاتمہ

مزید :

صفحہ آخر -