ثقافت کا فروغ‘ ملتان میں ”دو روزہ لوک ورثہ میلہ“ کرانے کا فیصلہ

 ثقافت کا فروغ‘ ملتان میں ”دو روزہ لوک ورثہ میلہ“ کرانے کا فیصلہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


ملتان (سپیشل رپورٹر)  موسم بہار میں جنوبی پنجاب کی دستکاریوں اور ثقافت پر مشتمل دو روزہ ”جنوبی پنجاب لوک ورثہ میلہ“ قلعہ کہنہ قاسم باغ ملتان پر منعقد کیا جائے گا۔ اس امر کا فیصلہ گزشتہ روز کمشنر ملتان جاوید اختر محمودکے ساتھ ڈائریکٹر پنجاب سمال انڈسٹریز کارپوریشن یاور مہدی کی ایک ملاقات کے دوران کیا گیا۔ اس موقع پر ریجنل ڈائریکٹر پنجاب سمال (بقیہ نمبر43صفحہ 6پر)
انڈسٹریز کارپوریشن عمارہ منظور اور اسسٹنٹ ڈائریکٹر کشمالہ ارم بھی موجود تھیں۔ یاور مہدی نے کہا کہ ایم ڈی پنجاب سمال انڈسٹریز کارپوریشن جمیل احمد جمیل کی ہدایت پر ملتان میں جنوبی پنجاب کی دستکاریوں اور اس خطے کی لوک ثقافت کے فروغ کے لئے لوک ورثہ میلہ فروری کے اواخر میں منعقد کرنے کی تجویز ہے. کمشنر ملتان نے اس تجویز کو سراہتے ہوئے آمادگی کا اظہار کیا اور کہا کہ ایس او پیز میں رہتے ہوئے اس میلے کا انعقاد کیا جائے گا اور اس میں اہم ممالک کے سفارت کاروں کو بھی مدعو کیا جائے گا تاکہ ملتانی ثقافت اور دستکاریاں متعارف ہوسکیں۔یاور مہدی نے کمشنر ملتان کو بتایا کہ ملتان کے کاشی گروں، نقاشوں، کھسہ سازوں، کشیدہ کاروں، بلوپاٹری بنانے والوں، کیمل سکن اور ہینڈ لومز کے 118دستکاروں کو 16.7ملین روپے کے بلاسود قرضے فراہم کئے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ وزیراعلیٰ پنجاب کی پنجاب روزگار سکیم کے تحت 16لاکھ لوگوں کو روزگار کی فراہمی کے مواقع فراہم کئے گئے ہیں جن میں گھریلو صنعتوں کا فروغ اور جنوبی پنجاب کے کرافٹ کلسٹر کی افزائش اور نشوونما شامل ہیں۔ ڈائریکٹر پنجاب سمال انڈسٹریز کارپوریشن نے ہینڈی کرافٹس پر مشتمل 14کتابوں کا تحفہ بھی کمشنر ملتان کو پیش کیا۔ کمشنر ملتان جاوید اختر محمود نے فن و ثقافت کے حوالے سے پنجاب سمال انڈسٹریز کارپوریشن کی کاوشوں کو سراہا اور ریجنل ڈائریکٹر عمارہ منظور کو خصوصی ہدایت کی کہ وہ جنوبی پنجاب کے فنون اور ثقافت کے فروغ کے لئے کوئی دقیقہ فروگزاشت نہ کریں۔
لوک ورثہ