ٹرانسپورٹ کرایوں میں کئی گنا اضافہ‘ مسافروں سے جھگڑے‘ انتظامیہ غائب 

  ٹرانسپورٹ کرایوں میں کئی گنا اضافہ‘ مسافروں سے جھگڑے‘ انتظامیہ غائب 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 عبدالحکیم(سٹی رپورٹر) کورونا لاک ڈاؤن کے دوران عوامی مشکلات کو مدنظررکھتے ہوئے پبلک ٹرانسپورٹ کو آزمائشی بنیادوں پر چلایا گیا تھا جس میں وضع کردہ ایس او پیز کے مطابق پبلک ٹرانسپورٹ میں 50فیصد مسافروں کو بٹھانے کی اجازت دی گئی تھی اوراس (بقیہ نمبر46صفحہ 7پر)
دوران کرایہ بھی روٹین سے دگنا کیا گیا تھا۔اس اجازت کے بعد موٹروے پر چلنے والی ٹرانسپورٹ نے تو ایس او پیز پر عمل درآمد کیا البتہ ڈسٹرکٹ روڈز اور لوکل سطح پر ان اصول وضوابط کویکسرنظرانداز کردیا گیا تاہم ان ٹرانسپورٹرز نے کرایوں میں اسی شرح سے اسی دن اضافہ کردیا تھا،روزانہ سفر کرنیوالے مسافروں نے بتایا کہ عبدالحکیم سے لاہور کا کرایہ 350/400روپے لیا جاتا تھا اب 700/650روپے وصول کیا جارہا ہے،عبدالحکیم سے ملتان کا کرایہ 120روپے لیا جاتا تھا حالیہ دنوں 180روپے وصول کیا جارہا ہے۔عبدالحکیم سے فیصل آباد کا کرایہ 250280/روپے کی بجائے350/330روپے لیا جاتا ہے۔عبدالحکیم سے کراچی کا کرایہ 1400سے2000روپے لیا جارہا ہے جبکہ لاک ڈاؤن سے قبل800سے 1000روپے تھا۔اسی طرح راولپنڈی کیلئے بھی 800کی بجائے1200روپے زائد وصولی کا سلسلہ جاری ہے،اسکے علاوہ میاں چنوں،خانیوال،پیرمحل،شورکوٹ،کبیروالا و دیگر نزدیکی شہروں کیلئے بھی لوکل ٹرانسپورٹر زائد کرایہ وصول کررہے ہیں۔روزانہ سفر کرنیوالے مسافروں نے ڈپٹی کمشنر خانیوال اور ریجنل ٹرانسپورٹ اتھارٹی سے مطالبہ کیا ہے لوکل وعلاقائی ٹرانسپورٹ کے ساتھ ساتھ ریجنل وپرونشل ٹرانسپورٹ کے کرایوں کاازسرنوجائزہ لیکرخودساختہ اضافہ ختم کرکے کرایوں کواعتدال پر لایا جائے۔ 
اضافہ