مفتی محمد عاصم زکی‘ مفتی زرولی خان  مولانا محمد اکبر کی خدمات برسوں یاد  رہیں گی‘ زبیر احمد صدیقی کی بات چیت

مفتی محمد عاصم زکی‘ مفتی زرولی خان  مولانا محمد اکبر کی خدمات برسوں یاد  ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 ملتان (سپیشل رپورٹر) علماء و مشائخ کی کثرت سے رحلت امت کے لیے ابتلاء عظیم ہے۔ مفتی زر ولی خان حدیث و (بقیہ نمبر43صفحہ 7پر)
فقہ، تفسیر میں سند کا درجہ رکھتے تھے۔ ان کی شجاعت، حق گوئی برسوں یاد رہیں گی۔ تقریر و تحریر میں بھی ان کی خدمات نا قابل فروش ہیں۔ مولانا محمد اکبر شیخ الحدیث جامعہ قاسم العلوم ملتان، علم و عمل میں اپنے اکابر کا نمونہ تھے۔ انہوں نے نصف صدی سے زائد عرصہ قال اللہ و قال الرسول کی صدائیں بلند کیں۔ مفتی محمد عاصم زکی کی سماجی خدمات بین الاقوامی سطح کی ہیں۔ سونامی، سیلاب، زلزلوں، قحط اور افلاس میں مسلمانوں کی مدد کے لیے دنیا کے کونے کونے میں پہنچتے رہے۔ وہ نام و نمود سے پاک ہو کر مصروف عمل رہے۔ ان مشائخ کے چلے جانے سے امت یتیم ہو گئی۔ ان خیالات کا اظہار وفاق المدارس العربیہ جنوبی پنجاب کے ناظم اور جامعہ فاروقیہ شجاع آباد کے مہتمم مولانا زبیر احمد صدیقیؔ نے جامعہ فاروقیہ شجاع آباد میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ ان مشائخ  و علماء کے نقش قدم پر چل کر نئے فضلاء امت کی رہنمائی کا فریضہ سر انجام دے سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان شخصیات کے اخلاص، جہد، تقویٰ اور دین کے مختلف شعبہ جات میں خدمات کو رہتی دنیا تک یاد رکھا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ چند مہینوں سے تواتر کے ساتھ علماء و مشائخ کی رحلت کی وجہ سے علماء کرام اور امت بے سہارا ہوتی جارہی ہے۔ احادیث میں ذکر کردہ قیامت کی علامات کا ظہور ہو رہا ہے۔ کرونا وائرس جیسی مہلک وباء سے کثرت اموات بھی اللہ تعالیٰ کی جانب سے امت کے لیے تنبیہ ہے۔ امت مسلمہ کو رجوع الی اللہ، توبہ و استغفار اور ترک معاصی کی جانب متوجہ کرنا ہوگا۔ فحاشی، عریانی، بد دیانتی اور خیانت جیسے گناہ اللہ تعالیٰ کی جانب سے عطا کردہ ایمان علم اور صحت و زندگی کی نعمتیں سلب کررہی ہیں۔ انہوں نے امت سے ان مشائخ و علماء کی بلندی درجات، کرونا وائرس میں جان بحق ہونے والے مسلمانوں کی مغفرت اور وباء سے نجات کے لیے دعاؤں کی اپیل کی، انہوں نے کہا کہ وباء میں جان بحق ہونے والے مسلمان شہید قرار دیے گئے ہیں۔
بات چیت