انکم ٹیکس گوشوارے جمع کرانے کی آخری تاریخ  تک کتنے لاکھ افراد نے گوشوارے داخل کروائے اور کتنا انکم ٹیکس جمع ہوا؟ ایف بی آر نے اعدادوشمار جاری کردیئے

انکم ٹیکس گوشوارے جمع کرانے کی آخری تاریخ  تک کتنے لاکھ افراد نے گوشوارے ...
انکم ٹیکس گوشوارے جمع کرانے کی آخری تاریخ  تک کتنے لاکھ افراد نے گوشوارے داخل کروائے اور کتنا انکم ٹیکس جمع ہوا؟ ایف بی آر نے اعدادوشمار جاری کردیئے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے دعویٰ کیا ہے کہ ملک بھر میں آخری تاریخ تک ریکارڈ انکم ٹیکس گوشوارے داخل کئے گئے۔

ایف بی آر کے مطابق فائلنگ کے دوران پہلی مرتبہ سب سے زیادہ انکم ٹیکس حاصل کیا گیا ہے، آخری تاریخ تک تقریبا18 لاکھ انکم ٹیکس گوشوارے داخل کئے گئے اور تقریبا 22 ارب کا انکم ٹیکس جمع ہوا، پچھلے سال اسی عرصہ میں 17 لاکھ 30 ہزار انکم ٹیکس گوشوارے جمع ہوئے جبکہ 13.5 ارب روپے انکم ٹیکس حاصل ہوا، 4 فیصد زائد انکم ٹیکس گوشوارے جمع ہوئے اور 63 فیصد زائد ٹیکس اکھٹا ہوا،حکومت نے 8 دسمبر 2020 کے بعد مزید تاریخ میں توسیع نہیں کی،توسیع تاریخ نہ بڑھانے کا بنیادی مقصد ٹیکس گزاروں کا آخری تاریخ پر اعتماد بحال کرنا ہے تاکہ ٹیکس ڈسپلن کو پروان چڑھایا جا سکے، ٹیکس گزاروں کی سہولت کے لئے  خصوصی اقدامات اٹھائے گئے ہیں،چیف کمشنرز آئی آرکو قانون کے تحت ٹیکس گوشوارے جمع کرانے کی تاریخ میں فراخدلانہ توسیع کی ہدایت، آن لائن طریقے سے توسیع حاصل کرنے کی درخواست کے ساتھ دستی درخواست کی بھی اجازت دی گئی،ٹیکس ایڈوائزرز کو ایک درخواست پر کئی ٹیکس گزاروں کو توسیع کی سہولت،چیف کمشنرز کی طرف سے  دستی درخواستوں کی وصولی اور حدود کی نشاندہی کے لئے خصوصی ڈیسک کی تشکیل،اندازہ کے مطابق 3 لاکھ ٹیکس گزاروں نے توسیع کیلئے درخواستیں دی،  توسیع حاصل کرنے والوں کو شامل کرنے کے بعد گوشوارے داخل کرنے والوں کی تعداد 21 لاکھ تک بڑھ جائے گی،جو کہ پچھلے سال اسی عرصہ کے لحاظ سے 21 فیصد زائد گوشوارے بنتے ہیں۔

ایف بی آر ٹیکس گزاروں کے مصمم ارادوں اور ملک بھر کے ٹیکس بار کے ممبران کا شکر گزار ہے جن کی وجہ سے ریکارڈ گوشوارے اور انکم ٹیکس حاصل ہوا۔ کامیابی کے یہ اعداد ظاہر کرتے ہیں کہ ٹیکس گوشوارے جمع کرانے کی تاریخ میں توسیع نہ کرنے کا فیصلہ ٹیکس نظام پر ٹیکس گزاروں کے اعتماد کو فروغ دینے کا باعث بنے گا، ٹیکس گوشوارے نہ جمع کرانے اور توسیع کی درخواست  بھی نہ دینے والوں کے خلاف  موثر ایکشن کا آغاز بھی کر دیا جائے،ایف بی آر کو یہ کامیابی چیئرمین ایف بی آر، ممبران ایف بی آر، تمام فیلڈ دفاتر اور آئی ٹی کی نئی ٹیم کی محنت اور بے لوث لگن کے باعث حاصل ہوئی ہے،ایف بی آر وزیراعظم کے ویثرن کے مطابق تمام پراسیس کو آٹومیشن میں تبدیل کرنے کی کوشش میں ہمہ وقت کوشاں ہے۔