پی ایم سی، 60 فیصد نمبروں پر داخلہ دے 

پی ایم سی، 60 فیصد نمبروں پر داخلہ دے 

  

چند روز قبل پی ایم سی سندھ نے میڈیکل کالجز میں 50 فیصد نمبر حاصل کرنے والے طلبہ و طالبات کو داخلہ دینے کا اعلان سندھ کے وزیر صحت اور وزیر اطلاعات، سعید غنی نے اپنی مشترکہ پریس کانفرنس میں کیا۔ اس بارے میں سندھ حکومت کے وفاق سے بعض امور پر تحفظات سے قطع نظر محکمہ صحت سے تعلق رکھنے والے ملازمین اور بالخصوص میڈیکل کالجز میں داخل ہو کر تعلیم حاصل کرنے والے طالب علموں کی پیشہ ورانہ اہلیت اور قابلیت پر خصوصی توجہ دینا اور اس پر کوئی ایسا سمجھوتہ کرنے سے قبل خوب غور و خوض اشد ضروری ہے اگر مستقبل میں چند سال کی تعلیم اور کچھ تربیت کے بعد جو طلبہ اور طالبات، امتحانات میں کامیابی کے بعد ڈاکٹر بنیں گی تو ان میں اتنی ذہنی اور فنی استعداد اور اتنا عبور ہونا چاہئے کہ وہ عام لوگوں کی جسمانی اور ذہنی پریشانیوں اور بیماریوں کے موثر علاج اور صحت یابی کے حصول کی خاطر شعبہ صحت کی جدید کتب کے مطالعہ اور تجربہ گاہوں سے لی گئی مطلوبہ معیار کی تربیت کے مطابق صلاحیت حاصل کر سکیں۔ اب اگر ان کے داخلہ کے لئے نمبروں کی تعداد 65 فیصد سے کم کر کے 50 فیصد قانونی طور پر مقرر کر دی گئی ہے تو اس بارے میں عام لوگوں کو اس کم معیار کی تبدیلی پر کچھ افسوس، تشویش اور پریشانی کے ساتھ کھلا اختلاف بھی ہو سکتا ہے۔ کیونکہ صوبہ سندھ کے بعض شہری علاقوں میں تو امتحانات کے انعقاد کے وقت، پرچوں کے حل کے دوران، طلبہ کو نقل لگانے کے کھلے عام مواقع فراہم کئے جاتے رہے ہیں اور انہیں وہاں موجود اساتذہ کا عملہ اس غیر قانونی کارروائی سے روکتا نہیں یا انہیں کسی متعلقہ افسر یا اتھارٹی کے حکم کی بنا پر نقل لگانے سے روکا نہیں جاتا لہٰذا سندھ میں امتحانات میں نقل لگانے پر سخت پابندی لگائی جائے اور داخلہ کے لئے 60 فیصد نمبر حاصل کرنا لازم قرار دیا جائے۔

مزید :

رائے -کالم -