بد عنوانی ملک کی ترقی اور خوشحالی کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ: جسٹس (ر) جاوید اقبال 

بد عنوانی ملک کی ترقی اور خوشحالی کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ: جسٹس (ر) جاوید ...

  

      اسلام آباد(آن لائن)چیئرمین نیب جسٹس جاوید اقبال کی قیادت میں نیب نے گزشتہ چار سال کی رپورٹ جاری کر دی رپورٹ کے مطابق بدعنوانی ایک ایسی لعنت ہے جو تمام برائیوں کی جڑہے۔بدعنوانی نہ صرف ملک کو مالی طور پر نقصان پہنچاتی ہے بلکہ ملک کی خوشحالی اور ترقی کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔ بدعنوانی کے ملکی ترقی و خوشحالی پر مضر اثرات کے پیش نظر 1999 میں قومی احتساب بیورو کا قیام عمل میں لایا گیا تا کہ ملک سے بدعنوانی کے خاتمے اور بدعنوان عناصر سے لوٹی گئی رقم برآمد کر نے بدعنوان عناصر کو قانون کے مطابق سزا دلوائی جاسکے۔قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس جاوید اقبال’احتساب سب کیلئے“ ملک سے بد عنوانی کا خاتمہ ان کی اولین ترجیح اور زیرو ٹالرنس اور خود احتسابی کی پالیسی پر سختی سے عمل پیرا ہیں۔ جسٹس جاوید اقبال کی قیادت میں نیب نے گزشتہ 4 سالوں کے دوران بدعنوان عناصر سے بلواسطہ اور بلاواسطہ طور پر 539 ارب وصول کیے ہیں جو کہ پچھلے سالوں کے مقابلے میں قابل ذکر کامیابی ہے۔ نیب کو اپنے آغاز سے اب تک 501723 شکایات موصول ہوئیں جن میں سے 491358 شکایات کو نمٹا دیا گیا ہے۔ نیب نے 16188 شکایت کی تحقیقات کی قانون کیمطابق اجازت دی جن میں سے 15391 شکایت کی تحقیقات مکمل ہوچکی ہیں۔ نیب نے 10297 انکوائریاں قانون کے مطابق شروع کیں جن میں سے 9260 انکوائریاں مکمل ہوچکی ہیں۔ قومی احتساب بیورو نے 4693 تحقیقات کی اجازت دی جن میں سے 4353 تحقیقات نیب نے مکمل کی ہیں۔ نیب نے 821 ارب روپے کی بالواسطہ اور بلاواسطہ اپنے قیام کے بعد سے اب تک برآمد کیے۔ نیب نے مختلف فاضل احتساب عدالتوں میں 3760 ریفرنس دائر کیے جن میں سے 2482 ریفرنسز کے فیصلے فاضل احتساب عدالتوں نے سنا دیئے ہیں۔ اس وقت 1278 ریفرنس جن کی مالیت تقریباََ 1335 ارب روپے ہے جو ملک کی مختلف معززاحتساب عدالتوں میں زیر سماعت ہیں۔

جسٹس(ر) جاوید اقبال

مزید :

علاقائی -