طالبان دہشتگرد، دنیا تسلیم نہ کرے،اشرف غنی افغان عوام کے غدار،عبدالہادی نجرابی

طالبان دہشتگرد، دنیا تسلیم نہ کرے،اشرف غنی افغان عوام کے غدار،عبدالہادی ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


واشنگٹن (آئی این پی)واشنگٹن میں کابل کی سابق حکومت کی نمائندگی کرنیوالے آخری سفارتکاروں میں سے ایک نے امریکہ سے درخواست کی ہے وہ طالبان کو افغانستان کی جا ئز حکومت کے طور پر تسلیم نہ کرے،طالبان افغان عوام کے نمائندے نہیں،آپ کسی دہشت گرد گروہ پر کیسے بھروسہ کرسکتے ہیں اسے کسی ملک کی جائزحکومت کے طور پر تسلیم کیا جائے؟،ہمیں طالبان کیساتھ کسی قسم کے تعلقات بحال رکھنے میں کوئی دلچسپی نہیں،طالبان کابینہ میں امریکہ کے بلیک لسٹ کردہ متعدد افراد شامل ہیں جن پر پابندیاں ہیں مگراب وہ طا لبا ن حکومت میں اعلیٰ عہدوں پر فائزہیں، طالبان میڈیا میں جو کہہ رہے ہیں، وہ اس سے بہت مختلف ہے جو کچھ وہ افغانستان میں عملاًکررہے ہیں،امریکہ نواز سابق صدر اشرف غنی افغان عوام کا غدار ہے،کابل کے زوال کے بعد اشرف غنی سے کوئی رابطہ نہیں ہوا۔ واشنگٹن میں افغانستان کے ڈپٹی چیف آف مشن عبدالہادی نجرابی نے العربیہ انگلش کو ایک حالیہ انٹرویو میں بتایا امریکہ میں افغان سفارتخانہ میں متعیّن سفارتکار طالبان کو تسلیم کرنے سے انکار کرتے ہیں اورانھوں نے گروپ کی ابلاغی روابط بحال کرنے کی تمام کوششوں کومسترد کردیا ہے۔ہم یقینی طور پر کابل اور طالبان کیساتھ رابطے میں نہیں، ہمیں طالبان کیساتھ کسی قسم کے تعلقات بحال رکھنے میں بھی کوئی دلچسپی نہیں، ہم انہیں نہیں پہچانتے، نجرابی نے واشنگٹن میں قریب قریب خالی سفارتخانہ میں گفتگو کرتے ہوئے کہا طالبان پرانسداد دہشتگردی کے تحت پابندیاں کی وجہ سے ان کیساتھ کسی بھی فرد یا ادارے کا مالی لین دین غیرقانو نی ہے۔ انہوں نے کہا انہیں اور ان کے ساتھیوں کو طالبان حکام کی جانب سے ای میلز موصول ہوتی رہتی ہیں اور وہ ہم سے رابطہ قائم کرنے کی کوششیں کر رہے ہیں۔ طالبان کی جانب سے اسلام اور شریعت کے بارے میں اپنا طرزعمل تبدیل کرنے کے عزم کے باوجود نجرابی نے کہا اس کے ثبوت میں تو وہ کچھ بھی پیش نہیں کررہے ہیں اور ان کے عملی اقدا مات اس دعوے سے مختلف ہیں۔ طالبان ذمہ دار لوگ نہیں وہ میڈیا میں جو کچھ بھی کہہ رہے ہیں، وہ اس سے بہت مختلف ہے جو کچھ وہ افغانستان میں عملاًکررہے ہیں۔ پاکستان، چین اور روس عالمی برادری کو طالبان کی نئی حکومت تسلیم کرنے پر قائل کرنے کی کوشش کررہے ہیں مگر انہوں نے سابق حکومت کے سفارتکاروں سے رابطہ کرنے کی کوشش نہیں کی۔ افغان پناہ گزینوں کو قونصلر خدمات فراہم کی جارہی ہیں۔ 
نجرابی 

مزید :

علاقائی -