پشاور،گیس لوڈشیڈنگ  کیخلاف دائر رٹ پر جواب طلب 

پشاور،گیس لوڈشیڈنگ  کیخلاف دائر رٹ پر جواب طلب 

  

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاو رہائیکورٹ نے گیس لوڈشیڈنگ کیخلاف دائر توہین عدالت کی درخواست پروفاقی حکومت اور ایس این جی پی ایل حکام کونوٹسزجاری کرکے جواب طلب کرلیا ہے، چیف جسٹس قیصررشید خان اور جسٹس عتیق شاہ پرمشتمل دورکنی بنچ نے بیرسٹر محسن کامران کی جانب سے دائررٹ پر سماعت کی،د وران سماعت ان کے وکیل فرہان طارق عدالت میں پیش ہوئے اور بتایا کہ آئین کے آرٹیکل 158 کے تحت جس صوبے میں گیس پیدا ہوگا توسب سے پہلے اس صوبے کے ضروریات کو پورا کیا جائے گااور بعد میں دیگر صوبوں کو گیس سپلائی کیا جائے گا۔انہوں نے بتایا کہ خیبرپختونخوا میں اس وقت ضرورت سے زیادہ گیس پیدا ہورہی ہے اس لئے لوڈشیڈنگ کا جواز نہیں بنتالیکن اسکے باوجود لوڈشیڈنگ ہورہی ہے بلکہ کئی مقامات پر گیس موجود ہی نہیں۔ انہوں نے بتایاکہ صوبے میں گیس لوڈشیڈنگ سے متعلق ایس این جی پی ایل کے نوٹسز غیرقانونی وغیرآئینی ہیں کیونکہ اس حوالے سے پشاورہائیکورٹ کے فیصلے بھی موجود ہیں جسکے تحت لوڈشیڈنگ نہیں کی جاسکتی۔ انہوں نے بتایا کہ گیس لوڈشیڈنگ کیوجہ سے نہ صرف صارفین کو شدید مشکلات کا سامنا ہے بلکہ یہ حادثات کا بھی سبب بن رہے ہیں۔ انہوں نے گیس لوڈشیڈنگ کرنے پر متعلقہ حکام کیخلاف توہین عدالت کی کارروائی عمل میں لانے کی استدعا کی۔ دورکنی بنچ نے وفاقی حکومت اور ایس این جی پی ایل حکام کو نوٹسز جاری کرکے انہیں حکم دیا کہ رپورٹ امپلی مینٹیشن سیل میں جمع کرائیں کہ کیوں عدالتی فیصلوں پر عملدرامد نہیں کیاجارہاہے۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -