خسرہ سے بچاؤ کی ڈوز لگتے ہی بچی کی حالت غیر، کمیٹی قائم

خسرہ سے بچاؤ کی ڈوز لگتے ہی بچی کی حالت غیر، کمیٹی قائم

  

ملتان (وقائع نگار)ملتان میں محکمہ صحت اور نجی سکول انتظامیہ کی  غفلت کے باعث پہلے سے ویکسین شدہ بچی کو خسرہ روبیلا کی ایک اور ڈوز لگا دی گئی، ٹیکہ لگتے ہی بچی کی(بقیہ نمبر44صفحہ6پر)

 حالت غیر ہوگئے  11 روز سے 6 سالہ زنیرہ موت و حیات کی کشمکش  میں چلڈرن کمپلیکس میں زیر علاج،والد کی دہائی پر سی ای او ہیلتھ ملتان نے تین رکنی کمیٹی قائم کر دی، سیکرٹری ہیلتھ جنوبی پنجاب کا نوٹس بچی کا سرکاری خرچ پر علاج کروانے کی ہدایات تفصیل کے مطابق ملتان کے علاقے موضع  ڈومرہ  کے رہائشی ندیم احمد نے بتایا کہ خسرہ روبیلا مہم کے دوران چوبیس نومبر کو گھر پر موجود اسکی آٹھ سالہ بیٹی طوبی ندیم اور  چھ سالہ بیٹی زنیرہ کو محکمہ صحت ٹیموں نے  خسرہ روبیلا کا ٹیکہ لگایا تاہم چھبیس نومبر کو پیراں غائب روڈ پر قائم نجی سکول انتظامیہ نے بغیر کوئی اطلاع دئیے بچیوں کے منع کرنے کے باوجود سکول آئی ہوئی محکمہ صحت کی ٹیموں کے ذریعے خسرہ روبیلا کا ایک اور ٹیکہ دونوں بچیوں کو لگوا دیا جس سے چھ سالہ زنیرہ  کی حالت خراب ہو گئی والد ندیم کے مطابق زنیرہ پہلے سات روز نشتر ہسپتال اور اب کئی روز سے چلڈرن کمپلیکس کے نیورو وارڈ میں زیر علاج ہے،جبکہ علاج  پر اب تک ستر ہزار روپئے خرچ ہو چکے ہیں، ڈپٹی کمشنر ملتان کو بھی درخواست دے چکے ہیں تاہم کوئی سنوائی نہیں ہو رہی ادھر سی ای او ہیلتھ ملتان ڈاکٹر شعیب الرحمان گورمانی نے معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے تین رکنی انکوائری کمیٹی قائم کر دی ہے ڈاکٹر شعیب الرحمان گورمانی نے بتایا کہ کمیٹی کی رپورٹ موصول ہوتے ہی ذمہ داران کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائیگی ادھر سیکریٹری ہیلتھ جنوبی پنجاب تنویر اقبال تبسم نے معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے سی ای او ہیلتھ کو انکوائری جلد مکمل کرنے اور بچی کا علاج سرکاری طور پر کروانے کے احکامات جاری کئے ہیں 

کمیٹی قائم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -