اسلام آباد میں شراب پی کر گاڑی چلانے والوں کو اب کتنی سزا ملے گی ؟ سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ نے ترمیمی بل کی منظوری دے دی 

اسلام آباد میں شراب پی کر گاڑی چلانے والوں کو اب کتنی سزا ملے گی ؟ سینیٹ کی ...
اسلام آباد میں شراب پی کر گاڑی چلانے والوں کو اب کتنی سزا ملے گی ؟ سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ نے ترمیمی بل کی منظوری دے دی 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائےداخلہ نےوفاقی دارالحکومت میں شراب پی کر یانشے کی حالت میں گاڑی چلانے والوں کے لئے سزائیں بڑھانے کا بل متفقہ طور پر منظور کر لیا، ،کمیٹی نے وزیرداخلہ کے اجلاس میں نہ آنے پر شدید برہمی کااظہار کیا، رکن کمیٹی مولا بخش چانڈیو نے کہا کہ وزیرداخلہ کے پاوں پرمہندی لگی ہے،اس لیے کمیٹی میں  نہیں آتے ہیں ،حکومتی سینیٹر نےکہاکہ ہم ناامید نہیں،دعاکریں اُن  کے  پاوں میں مہندی لگ جائے۔

 سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کا اجلاس قائم مقام چیئرمین کمیٹی سینیٹرمحسن عزیز کی صدارت میں شروع ہوا ،جس میں سینیٹر ثمینہ ممتاز ،مولا بخش چانڈیو،سیف اللہ ابڑو،شہادت اعوان ،فوزیہ ارشد،فیصل سبزواری اور ڈاکٹر زرقہ تیموراور سعدیہ عباسی نے شرکت کی ۔سینیٹ کی قائمہ کمیٹی داخلہ نے سیالکوٹ میں سری لنکن شہری کی ہلاکت کی مذمت کی اور کمیٹی نے متفقہ طور پر قراردادمذمت منظور کی ۔

اجلاس میں پروینشل موٹر وہیکل(ترمیمی)بل2021ءکاجائزہ لیا گیا ،سینیٹرمحسن عزیز نےکمیٹی کو بتایا کہ نشہ کرکےگاڑی چلانےکےحوالےسےسزابڑھانےکےحوالےسے ہے،  اس طرح کابل مواصلات کمیٹی پہلےپاس کرچکی ہے،وہ نیشنل ہائی وے کےحوالےسےتھاجبکہ یہ بل اسلام آباد کے حوالے سے ہے۔بل کے مطابق نشہ کرکے گاڑی چلانے پر جرمانہ زیادہ کر دیا گیا ہے، جرمانہ 25ہزار کر دیا ہے اور قید کی سزا ایک ماہ کر دی ہے ، ایک دفعہ سزا کے بعد کے بعد دوبارہ سزا ہوتی ہے تو جرمانہ زیادہ کیا جائے اور قید بھی بڑھائی جائے، دوسری مرتبہ وہی کام کرنے پر50ہزارروپےتک سےدو سال تک قید کی دی جاسکتی ہےیادونوں سزائیں دی جاسکیں گی۔ کمیٹی نےجائزہ لینےکےبعدبل کی منظوری دے دی ۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -