ایم کیو ایم گورنر شپ کیساتھ "فون" بھی چاہتی تھی ، عمران اسماعیل کا دعویٰ

ایم کیو ایم گورنر شپ کیساتھ "فون" بھی چاہتی تھی ، عمران اسماعیل کا دعویٰ
ایم کیو ایم گورنر شپ کیساتھ

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان تحریک انصاف  کےرہنما اور سابق گورنر سندھ عمران اسماعیل نے دعویٰ کیا کہ جب ایم کیو ایم اتحادی تھی تو وہ سندھ کی گورنر   شپ اور ایک "فون" چاہتی تھی ۔

نجی ٹی وی "اے آر وائی " نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے  عمران اسماعیل نے دعویٰ کیا کہ ایم کیو ایم پاکستان کے ساتھ ہونے والی ملاقاتوں میں نے سندھ کی گورنر شپ مانگی ،ہم یہ دینے کیلئے راضی تھی مگر وہ ساتھ میں ایک "فون" بھی چاہتے تھے ۔ 

عمران اسماعیل نے کہا کہ ایم کیو ایم پاکستان سے مذاکرات میں کوئی ڈھکی چھپی بات نہیں ہوتی تھی ، بیرسٹر فروغ نسیم بھی ہمراہ ہوتے تھے ، وہ تو کہتے تھے کہ ایم کوی ایم سے تعلق نہیں ، عمران خان ہمارا بھائی اور لیڈر ہے ، خود ایم کیو ایم کہتی تھی کہ فروغ نسیم کو عمران خان نے خود وزیر بنایا ، بعد میں کیا مسائل ہوئے ان کا جواب تو فروغ نسیم ہی دے سکتے ہیں۔ 

سابق گورنر سندھ نے کہا کہ ہم سے پونے چار سال میں جو ہو سکا ہم نے کراچی کیلئے کیا ،متعدد ایسے پراجیکٹ بھی تھے جس کے ہم نے فنڈز منظور کئے مگر وہ استعمال ہوئے بنا واپس آگئے ۔

عمران اسماعیل نے کراچی کے ترقیاتی کاموں میں سید مراد علی شاہ کو رکاوٹ قرار دیا ۔  اسمبلیاں توڑنے سے متعلق عمران اسماعیل کاکہنا تھا کہ  یہ اٹل فیصلہ ہے ، اس وقت مسلم لیگ (ن) جتنی مرضی بڑھکیں مار لے ، الیکشن  سے یہ لوگ بھاگیں گے کیونکہ یہ انتخابی میدان میں اترنا ہی نہیں  چاہتے ۔ 

مزید :

قومی -