پاکستان سے بھاگ کر بھارت جانے والی سیما حیدر نے اپنی وفاداری ثابت کرنے کیلئے واپس گئی انجو پر ’ حملے‘ شروع کر دیئے

پاکستان سے بھاگ کر بھارت جانے والی سیما حیدر نے اپنی وفاداری ثابت کرنے کیلئے ...
پاکستان سے بھاگ کر بھارت جانے والی سیما حیدر نے اپنی وفاداری ثابت کرنے کیلئے واپس گئی انجو پر ’ حملے‘ شروع کر دیئے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

ممبئی (ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان سے بھاگ کر بھارت جانے والی سیما حیدر نے انجو کی واپسی پر انہیں ایجنٹ قرار دیدیا ہے ۔

بھارتی ویب سائٹ ’ اے بی پی لائیو‘‘ کی جانب سے شائع کی گئی رپورٹ میں دعویٰ کیا گیاہے کہ گزشتہ ماہ انجو نامی خاتون اپنے دو بچوں اور شوہر کو چھوڑ کر اپنے عاشق سے شادی کرنے پاکستان چلی گئی جس سے اس کی ملاقات فیس بک کے ذریعے ہوئی۔ وہاں اس نے نصراللہ سے شادی کی لیکن اب وہ بھارت واپس آچکی ہے۔اور واپسی کے بعد میڈیا سے گریز کر رہی ہیں تو اس موقع پر وہیں نیپال کے راستے بھارت آنے والی سیما حیدر نے انجو پر ایجنٹ ہونے کا الزام لگایا دیا ہے

سیما حیدر نے سوال کیا ہے کہ انجو پہلے بھارت جیسے خوبصورت ملک سے چلی گئی اور پھر واپس آ گئی تو کیا پاکستان نے اسے اپنا ایجنٹ بنا کر بھارت بھیجا؟ انہوں نے کہاکہ اس کے لیے انجو سے پوچھ گچھ کی جانی چاہیے، کیا وہ کسی سازش کے تحت یہاں واپس آئی ہے۔ 

انجو کے پاکستان سے ہندوستان واپس آنے کے بعد ہریانہ پولیس نے اس سے پوچھ گچھ کی۔ ہریانہ پولیس ذرائع نے بتایا کہ انجو سے تقریباً 12 سوالات پوچھے گئے ہیں، ان سوالات کو مسلسل ریکارڈ کیا جا رہا ہے۔ انجو نے پولیس کو بتایا ہے کہ وہ اپنی مرضی سے پاکستان گئی تھی اور اپنی مرضی سے ہندوستان واپس بھی آئی تھی۔

جب میڈیا نے بھیواڑی ضلع کے ایس پی سے سوال کیا کہ پولیس نے انجو سے پوچھ گچھ کیوں کی تو انہوں نے کہا، 'انجو کی پاکستان جانے سے پہلے شادی ہوئی تھی، اس کے بچے بھی ہیں۔ جب وہ وہاں سے چلی گئی تو اس کے بھارتی شوہر اروند نے مقدمہ درج کرایا۔ اس سلسلے میں تفتیش کے لیے افسران کو بھیجا گیا تھا۔

پاکستان جانے کے بعد جب انجو ہندوستان واپس آئی تو ان سے مذہب کی تبدیلی کے بارے میں پوچھا گیا تو اس نے کہا کہ میں پیدائشی طور پر عیسائی ہوں اور میں نے وہاں (پاکستان) جا کر مسلم مذہب قبول کیا، لیکن مجھے ہندو مذہب کے بارے میں کوئی علم نہیں ہے۔ تاہم انہوں نے یہ نہیں بتایا کہ وہ اس وقت کس مذہب کی پیروی کر رہی ہیں۔