معیشت میں بدنظمی 2019 میں شروع ہوئی، 2022 میں بھٹہ بیٹھ گیا،ملک سے ایسا سلوک کرنے والوں کا محاسبہ ہونا چاہیے : نوازشریف

معیشت میں بدنظمی 2019 میں شروع ہوئی، 2022 میں بھٹہ بیٹھ گیا،ملک سے ایسا سلوک کرنے ...
معیشت میں بدنظمی 2019 میں شروع ہوئی، 2022 میں بھٹہ بیٹھ گیا،ملک سے ایسا سلوک کرنے والوں کا محاسبہ ہونا چاہیے : نوازشریف

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) مسلم لیگ (ن) کے قائد نوازشریف نے کہا ہےکہ کچھ کرداروں نے دوڑتے پاکستان کو ٹھپ کر کے رکھ دیا، معیشت میں بدنظمی 2019 میں شروع ہوئی، 2022 میں بھٹہ بیٹھ گیا، ملک سے ایسا سلوک کرنے والوں کا محاسبہ ہونا چاہیے۔ 

نجی ٹی وی" ڈان نیوز" کےمطابق لاہور میں سابق وزیراعظم نوازشریف کا اجلاس سے خطاب کے دوران کہنا تھا کہ اچھی بھلی حکومت اناڑی کے ہاتھ میں دے دی، جب کرنسی غیر مستحکم ہوتی ہے تو ہر چیز غیر مستحکم ہو جاتی ہے، قوم نے پچھلے 4  برسوں میں مشکل دور دیکھا ہے۔ 2017 میں جب میں وزیراعظم تھا تو ملک میں ترقی عروج پر تھی۔ ہمارے دور میں معاشرہ ہر لحاظ سے آگے بڑھ رہا تھا۔ 2019 سے معیشت غیر مستحکم ہوئی، ہم آ کر نہ سنبھالتے تو ملک ڈیفالٹ کر جاتا۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں چین، ایران اور افغانستان سے معاملات ٹھیک کرنا ہیں، ہمارے دور میں مودی اور واجپائی پاکستان آئے۔ اردگردکے ممالک سے ہم بہت پیچھے رہ گئے ہیں۔ ملک سے ایسا سلوک کرنے والوں کا محاسبہ ہونا چاہیے۔ 

مزید :

قومی -