ایف بی آرنے ٹیکس وصولی کیلئے ایک آئیسکوکے تمام بینک اکاؤنٹس منجمد کروا دیے

ایف بی آرنے ٹیکس وصولی کیلئے ایک آئیسکوکے تمام بینک اکاؤنٹس منجمد کروا دیے

  

 اسلام آباد(آن لائن)فیڈرل بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر)نے ٹیکس وصولی کیلئے ایک مرتبہ پھراسلام آباد الیکٹرک سپلائی کمپنی (آئیسکو) کے تمام بینک اکاؤنٹس منجمد کروا دیے ہیں، بینک اکاؤنٹس منجمد ہونے کے باعث آئیسکو ملازمین کو تنخواہیں، پنشن اور سینٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی کو ادائیگی رک گئی ہے جس کے باعث بجلی بحران پیدا ہونے کا خطرہ ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق ایف بی آرکی جانب سے ود ہولڈنگ ٹیکس کی کٹوتی کے خلاف اسلام آباد ہائیکورٹ نے حکم امتناع جاری کیا تھا، حکم امتناع جاری ہونے کے باوجود اسسٹنٹ کمشنر ایف بی آر فرخ سیال نے آئیسکوکو2 ارب93کروڑ روپے ودہولڈنگ ٹیکس کا نوٹس جاری کرتے ہوئے آئیسکو کے تمام31 بینک اکاؤنٹس منجمد کروا دیے۔آئیسکو کی لیگل ٹیم نے عدالت سے رجوع کیا جس پر اسلام آباد ہائیکورٹ نے اسسٹنٹ کمشنر فرخ سیال کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کر دیا۔ حکام کے مطابق اکاؤنٹس منجمد ہونے کے باعث رٹائرڈ ملازمین کو پنشن کی ادائیگی بھی بند ہوگئی ہے۔ آئیسکو کے چیف ایگزیکٹو آفیسر یوسف اعوان نے وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار، وفاقی سیکریٹری خزانہ ڈاکٹر وقار مسعود، چیئرمین ایف بی آر اور وزارت پانی و بجلی کو خط لکھا ہے کہ ایف بی آر آئیسکو سے غیرقانونی طور پر2 ارب93 کروڑ روپے کا ودہولڈنگ ٹیکس وصول کرنا چاہتا ہے۔  29 جنوری سے سینٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی کو ادائیگی کا عمل بھی بند ہے۔ خط میں کہا گیاکہ ایف بی آرکو فوری طور پر ٹیکس کٹوتی کے اقدام سے روک کر آئیسکو کے بینک اکاؤنٹس کھلوائے جائیں۔ #/s#

مزید :

کامرس -