یوکرین میں مزید فوج بھیجنا مسئلے کا حل نہیں، جرمن چانسلر اینجیلا مرکل

یوکرین میں مزید فوج بھیجنا مسئلے کا حل نہیں، جرمن چانسلر اینجیلا مرکل

  

میونخ (این این آئی)جرمن چانسلر اینجیلا مرکل نے مغربی ممالک کو انتباہ کرتے ہوئے کہاہے کہ یوکرین میں روس نواز باغیوں سے نمٹنے کے لئے فوج بھیجنا مسئلے کا حل نہیں ہے جبکہ فرانسیسی صدر فرانسس اولاند نے یوکرین کا مسئلہ حل نہ ہونے کی صورت میں جنگ چھڑجانے کا خدشہ ظاہر کردیا۔میونخ کانفرنس میں امریکی، یورپی، روسی اور یوکرینی حکام کی موجودگی میں خطاب کرتے ہوئے جرمن چانسلر نے یوکرین کے مسئلے کے سیاسی حل پر زور دیا۔ انہوں نے کہاکہ یوکرینی فوج کو ہتھیار دینا یا مزید فوج بھیجنا مسئلے کا حل نہیں ہے۔ جرمن چانسلر نے کہاکہ ضروری نہیں ہمارے دیئے گئے طریقہ کار کے تحت مسئلہ حل کرلیا جائے مگر ہمیں کوشش کرنی چاہئے فرانسیسی صدر فرانسس اولاند نے تجویز دی کہ یوکرین کے مشرقی علاقے کومزید اختیارات دیئے جانے چاہئیں کیونکہ یہ لوگ جنگ کے لئے چلے گئے ہیں اور اب انہیں واپس لانا کافی مشکل مرحلہ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس مسئلے کو پر امن طریقے سے حل کرنے کا آخری موقع ہے ورنہ ہم جنگ کی جانب چلے جائیں گے ۔فرانس کے صدر فرانسوا اولاند نے کہا کہ فرانس اور جرمنی جو معاہدہ پیش کیا ہے وہ یوکرین میں قیامِ امن کا ’آخری موقع ہو سکتا ہے۔صدر اولاند نے کہا کہ اس منصوبے میں موجودہ محاذِ جنگ کے گرد 50 تا 70 کلومیٹر چوڑا غیرفوجی علاقہ شامل ہو گا۔دونوں رہنماؤں کی کوشش ہے کہ یوکرین میں حکومت اور روس نواز باغیوں کے درمیان جنگ رک جائے۔

مزید :

عالمی منظر -