گاؤں والے مسلسل سونے کی پر اسرار بیماری میں مبتلاء معمہ حل ہو گیا

گاؤں والے مسلسل سونے کی پر اسرار بیماری میں مبتلاء معمہ حل ہو گیا

  

استانہ (نیوز ڈیسک) قازقسستان کا گاؤں کالاچی گزشتہ کچھ عرصے سے بین الاقوامی میڈیا میں خبروں کا موضوع بنا رہا ہے کیونکہ یہ دنیا میں واحد ایسی جگہ ہے کہ جہاں لوگ پراسرار نیند میں غرق پائے گئے ہیں۔ یہاں کے لوگ چلتے پھرتے اچانک غنودگی کی حالت میں چلے جاتے ہیں اور پھر کوئی چند گھنٹے، کوئی چند دن اور کوئی چند ہفتے کے لئے نیند سے بیدر نہیں ہوپاتا۔ ماہرین صحت اور سائنسدان ایک عرصے سے اس عجیب و غریب مسئلے ہر تحقیق کررہے تھے اور اب تک متعدد نظریات پیش کئے جاچکے تھے جن میں سے کچھ کے مطابق اس مسئلے کی وجوہات ماحولیات میں اور کچھ کے مطابق یہاں کے افراد میں کسی جینیاتی خرابی میں تھیں۔ انہیں تحقیق کاروں میں سے ایک پروفیسر لیونڈ ریخانوف بھی ہیں جو گزشتہ چار سال سے اس معمے پر تحقیق کررہے تھے اور اب بالآخر انہوں نے کالاچی گاؤں کے باسیوں کی پراسرار نیند کا راز دریافت کرلیا ہے۔ ڈاکٹر لیونڈ کی تحقیق کے مطابق گاؤں کے قریب واقع سوویت دور کی متروک یورینیم کی کانوں میں سے ریڈان گیس کا اخراج گاؤں کے لوگوں کو سلا رہا ہے۔ اگرچہ ان کانوں کی طرف پہلے بھی اشارہ کیا گیا تھا لیکن اکثر ماہرین کا خیال تھا کہ یہاں سے خارج ہونے والی یورینیم کی تابکاری مسئلے کی اصل وجہ تھی لیکن پروفیسر لیونڈ نے معلوم کیا ہے کہ کانوں کے نیچے موجود خلاء میں پانی کی سطح وقت کے ساتھ بلند ہوتی گئی جس کی وجہ سے ریڈان گیس کا اخراج زمین کی سطح سے باہر شروع ہوگیا اور یہی گیس گاؤں کے لوگوں میں غنودگی اور طویل نیند کی کیفیت پیدا کررہی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ چونکہ روایتی طریقوں سے اس گیس کا ماحول میں سراغ لگانا ممکن نہیں ہے اس وجہ سے اب تک کسی کو بھی یہ شک نہ گزرا تھا کہ مسئلہ کی وجہ ریڈان گیس بھی ہوسکتی ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -