معصوم محنت کشوں کابہیمانہ قتل تمام انسانیت کا قتل ہے، خورشید احمد

معصوم محنت کشوں کابہیمانہ قتل تمام انسانیت کا قتل ہے، خورشید احمد

  

 لاہور ( خبرنگار) بلدیہ ٹاؤن فیکٹری کراچی میں 258 معصوم محنت کشوں کو مبینہ طور پر آجران سے بھٹہ کے تنازعہ پر دہشت گردی سے بہیمانہ قتل کے ملزمان کو دہشت گردی کے قانون کے تحت جلد مثالی سزا دلوائی جائے تاکہ معصوم محنت کشوں کے بہیمانہ قتل عام کرنے والوں ملزمان کاحشر تمام قوم دیکھے ، معصوم محنت کشوں کا بہیمانہ قتل تمام انسانیت کا قتل ہے یہ بیان گزشتہ روز بزرگ مزدور راہنماء خورشیداحمد مرکزی جنرل سیکرٹری آل پاکستان ورکرزکنفیڈریشن نے بروز اتوار کو لاہور سے جاری کیا۔ اْنہوں نے اس موقعہ پر وزیراعظم پاکستان سے پْرزور مطالبہ کیا کہ وہ نج کاری کمیشن آف پاکستان کی مجوزہ سفارش کو رد کردیں جس میں اْس نے بے نظیر ایمپلائز سٹاک آپشن سکیم کے تحت صنعتی ملازمین کو ساڑھے بارہ فیصدی کمپنی کے حصص الاٹ کیئے تھے جو محنت کشوں کی سالہا سال جدوجہد سے حاصل ہوئے ان کی مجوزہ تنسیخ محنت کشوں کے مروجہ بنیادی حقوق کی سخت حق تلفی اور محنت کشوں کے ساتھ ظلم وناانصافی ہوگی جسے محنت کش برداشت نہیں کریں گے،۔ اْنہوں نے حکومت سے مزید مطالبہ کیا کہ وہ سرکاری شعبوں بمعہ بجلی ، ریلوے، نیشنل بینک، آئل اینڈگیس وغیرہ کی مجوزہ نج کاری کی بجائے اس کی کارکردگی میں اضافہ کے لئے اصلاحات کا نفاذ کرے محنت کشوں کا ان اداروں کی استعداد میں اضافہ کے لئے مکمل تعاون و مدد حاصل ہوگا کیونکہ ماضی میں بھی دوسرے اداروں کی نج کاری کئے گئے ادارے بند پڑے ہیں نیز ریٹائرڈ صنعتی کارکنوں کی مبلغ۔3600 روپے ماہوار ماہانہ اْجرت میں کم ازکم چھ ہزار روپے سرکاری ملازمین کی طرح اضافہ کیاجائے جسے کارکنوں کی سالہا سال کی جدوجہد سے گذشتہ حکومت نے یہ سہولت دی تھی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -