طالبہ سے پانچ اوباشوں کی آٹھ روز تک مسلسل زیادتی

طالبہ سے پانچ اوباشوں کی آٹھ روز تک مسلسل زیادتی
طالبہ سے پانچ اوباشوں کی آٹھ روز تک مسلسل زیادتی

  

بہاولپور (ویب ڈیسک) دہم کلاس کی یتیم طالبہ کو اوباش نے اغوا کرکے چار دن تک خود زبردستی زیادتی کی پھر ساتھیوں کے حوالے کردیا جو مسلسل آٹھ روز تک درندگی کا نشانہ بناتے رہے۔ چار روز بعد نیم بے ہوشی کی حالت میں سڑک کنارے پھینک دیاجس کے بعد یتیم لڑکی اپنا دماغی توازن کھو بیٹھی لیکن پولیس نے دس دن بعد مقدمہ درج کیااور اب بااثر ملزمان مدعیہ کو کیس واپس لینے کی دھمکیاں دے رہے ہیں۔ مقامی اخبار خبریں کے مطابق بیوہ عورت مسرت نذیر زوجہ عبدالغفور مرحوم سکنہ محلہ پنواراں چنی گوٹھ نے اپنی والدہ اور زیادتی کا شکار ہونے والی بیٹی انعم غفور کے ہمراہ بتایا کہ میری بیٹی 28 جنوری 2015ء کو کتابیں لینے کے لئے احمد پور شرقیہ گئی جہاں سے اسے اغوا کر لیا گیا اور مسلسل آٹھ روز زیادتی کا نشانہ بناتے رہے جب بیٹی کی حالت غیر ہو گئی تو اسے نیم بیہوشی کی حالت میں پھینک کر فرار ہو گئے ۔اس کے جسم پر تشدد کے نشانات تھے۔ پولیس تھانہ چنی گوٹھ نے 10 دن بعد اس وقوعہ کا مقدمہ درج کیا ہے۔ مقدمہ کا تفتیشی سب انسپکٹر شوکت ترین ملزمان کو گرفتار نہیں کررہا۔ ملزمان سرعام دندناتے پھررہے ہیں۔ متاثرہ خاندان کے افراد نے وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف، آئی جی پنجاب پولیس مشتاق احمد سکھیرا اور ڈی پی او بہاولپور سرفراز احمد فلکی سے ملزمان کی گرفتاری اور مقدمہ کا چالان انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت میں بھجوانے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

انسانی حقوق -