وفاق کا کراچی میں گرین لائن منصوبہ خود مکمل کرنے کا فیصلہ

وفاق کا کراچی میں گرین لائن منصوبہ خود مکمل کرنے کا فیصلہ

کراچی (اسٹاف رپورٹر) وفاق نے گرین لائن بس منصوبے کے لیے گرین سگنل دیتے ہوئے گرین لائن منصوبہ خود مکمل کرنے کا فیصلہ کیاہے جبکہ وزیر ٹرانسپورٹ سندھ سید اویس قادر شاہ نے کہا ہے کہ گرین لائن منصوبے پر سندھ کو اعتماد میں نہیں لیاگیا،اگر وفاق منصوبہ خود مکمل کرنا چاہتاہے تو سندھ کو اعتماد میں لے،اویس شاہ کے مطابق سندھ حکومت کو کہاگیا ہے کہ وفاق منصوبہ مکمل کرکے صوبے کے حوالے کریگاصوبائی دارالحکومت کراچی میں زیر تعمیر گرین بس منصوبے کی بروقت تعمیر کے لئے وفاقی حکومت نے منصوبے کو اپنے وسائل سے مکمل کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس پر سندھ حکومت نے تحفظات کا اظہار کیا ہے۔ سندھ حکومت کے ترجمان مرتضی وہاب نے معاملہ پر گفتگو کرتے ہوئے وفاقی حکومت کے فیصلہ پر تحفظات کا اظہار کیا۔کراچی کے علاقے سرجانی ٹاؤن سے ٹاور تک 27 کلو میٹر طویل گرین لائن منصوبے کو وفاق اور سندھ حکومت کے اشتراک سے تعمیر کیا جا رہا تھا لیکن اس کی تکمیل میں مختلف مسائل پیدا ہو رہے تھے۔گزشتہ دنوں وفاقی حکومت نے اعلان کیا کہ منصوبے کو 2019 تک مکمل طور پر فعال کرنے کے لیے اس کی مکمل فنڈنگ وفاق کرے گا۔کراچی کے کروڑوں شہریوں کو سستی اور تیز رفتار سفری سہولتیں پہنچانے کے لئے وفاقی حکومت نے ریپڈ بس ٹرانزٹ منصوبے کا آغاز کیا لیکن گرین لائن بس منصوبے کے روٹ میں تین بار تبدیلی کی گئی، جس سے نہ صرف منصوبے کی لاگت بڑھی بلکہ منصوبہ تاخیر کا شکار بھی ہوا۔کراچی میں ریپڈ بس ٹرانزٹ منصوبے کے لیے سہراب گوٹھ سے نمائش تک، بلیو لائن اورنگی ٹاؤن سے میٹرک بورڈ آفس تک، ایدھی لائن اور ملیر سے ٹاور تک بران لائن بنائی جانی ہے، لیکن گرین لائن اور ایدھی لائن کے علاوہ کسی منصوبے پر کام شروع نہیں ہو سکا ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر