ان ہاؤس تبدیلی جماعت اسلامی مزاحمت کرے گی: سراج الحق

  ان ہاؤس تبدیلی جماعت اسلامی مزاحمت کرے گی: سراج الحق

  



پشاور/لاہور(این این آئی) امیر جماعت اسلامی سینیٹرسراج الحق نے کہا ہے کہ جماعت اسلامی ان ہاؤ س تبدیلی پر یقین نہیں رکھتی،اس کے نتیجے میں ایک بار پھر خرید وفروخت کا بازارگرم ہوگا اور چھانگا مانگا کی سیاست دوبارہ شروع ہوگی،ان ہاؤ س تبدیلی کے خلاف جماعت اسلامی مزاحمت کرے گی،ان ہاؤ س تبدیلی عوام اور عوامی ایجنڈے کے خلاف سازش ہوگی،جماعت اسلامی شفاف اور غیر جانبدار انتخابات کا مطالبہ کرتی ہے تاکہ عوام کو ووٹ کے صحیح استعمال کا موقع ملے، سابقہ حکمرانوں نے ملک کی معیشت کو تباہ کر دیاتھا اور ان کے ادوار میں 31 ہزار ارب روپے قرض لیے گئے جب کہ موجودہ حکومت کے 18 ماہ میں گیارہ ہزار ارب روپے قرض لیے گئے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مرکز اسلامی پشاور میں ذمہ داران جماعت سے گفتگو اور غیر ملکی خبررساں ایجنسی کو انٹرویو دیتے ہوئے کیا۔ملکی سیاست میں اب سابق حکمرانوں کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے۔موجودہ حکومت نے بھی تبدیلی کا نعرہ لگایا لیکن تبدیلی کے بجائے عوام کی مشکلات میں اضافہ کیااور اب پی ٹی آئی کے اپنے کارکنان مایوس ہوکر بڑی تیزی کے ساتھ جماعت اسلامی میں شامل ہورہے ہیں۔ تبدیلی لانے والے سو فیصد ناکام ہوچکے ہیں، اداروں کو کمزور کردیا اور معیشت کے سارے اختیارات آئی ایم ایف کے حوالے کیے گئے اب وہ براہ راست مالیاتی اداروں کو کنڑول کر رہے ہیں۔ ملک کی شرح ترقی میں کمی آئی ہے اور ملک میں ایک خوف کی فضاہے۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ موجودہ حکومت کی کارکردگی کی عمدہ مثال تو یہ ہے کہ قومی اسمبلی اور سینیٹ میں 18 مہینوں میں کوئی بھی قانون سازی نہیں کرسکی، قومی اداروں کو بیچ کر ملک کو چلایا جارہا ہے۔

سراج الحق

مزید : صفحہ آخر