فرد جرم عائد کرنے کیلئے رانا ثناء 7مارچ کو طلب، فضل الرحمن ناراض، شہباز شریف واپس آرہے ہیں: رہنمان لیگ

  فرد جرم عائد کرنے کیلئے رانا ثناء 7مارچ کو طلب، فضل الرحمن ناراض، شہباز ...

  



لاہور(نامہ نگار)انسداد منشیات کی خصوصی عدالت کے جج شاکر حسن نے رانا ثناء اللہ کی گاڑی کی سپرداری اور گرفتاری کی فوٹیج فراہم کرنے کی دائر درخواستیں خارج کر دیں جبکہ پراسکیوشن کی جانب سے کیس کی روزانہ کی بنیاد پر سماعت کرنے کی درخواست بھی خارج کر دی ہے، عدالت نے کیس کی مزید سماعت 7مارچ تک ملتوی کرتے ہوئے رانا ثناء اللہ سمیت دیگر ملزموں پر فرد جرم کے لئے طلب کرلیاہے۔ عدالت نے درخواستوں پر محفوظ کیا گیافیصلہ سنایا ہے۔ انسداد منشیات کی خصوصی عدالت میں سابق صوبائی وزیر قانون رانا ثناء اللہ کے خلاف منشیات سمگلنگ کیس کی سماعت ہوئی،سابق صوبائی وزیر قانون پنجاب رانا ثناء اللہ سمیت 5 ملزم عدالت میں پیش ہوئے،ایک ملزم محمد اکرم قریبی عزیز کی وفات کی وجہ سے پیش نہیں ہو سکا جس کی جانب سے حاضری معاف کی استدعا کی گئی،جو عدالت نے منظور کرلی،فاضل جج نے ملزموں کی حاضری مکمل کرنے کے بعد انہیں جانے کی اجازت دے دی،اے این ایف کے وکیل نے کہا کہ ہم نے سپیڈی ٹرائل کیلئے استدعا کر رکھی ہے، 16 نومبر 2019ء کو عدالت نے سپرداری کا حکم دے دیا تھا، رانا ثناء اللہ کے وکلاء نے کہا کہ لاہور ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن کا 29 فروری کو الیکشن ہے اس لئے کیس کی سماعت 29 فروری کے بعد تک ملتوی کی جائے۔

رانا ثناء اللہ

لاہور(نامہ نگار)پاکستان مسلم لیگ (ن) کے راہنماراناثنااللہ نے عدالتی سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اگر ریاست ہی خود مدعی بن کے غلط مقدمہ درج کرتی ہو تو یہ باعث شرم بات ہے،عمران خان ریاست مدینہ کے سربراہ بنتے ہیں،کہاں انصاف ہے بتایا جائے،عدالتوں پر مکمل اعتماد ہے،مڈٹرم الیکشن ہونے چاہئیں، مولانا فضل الرحمن ناراض ہیں منا لیں گے،میاں شہباز شریف بیرون ملک سے واپس آ کر آل پارٹیز کانفرنس بلائیں گے،اس عدالت میں 10 سپیشل پراسیکیوٹر لگ چکے ہیں،6 کروڑ روپے فیس ادا کی گئی، معلومات بھی نہیں دی جارہی،یہ وہی عدالت ہے جس کا فیصلہ وٹس ایپ پر ہوا،پہلے اور موجودہ جج پر کوئی شک نہیں ہے، دونوں ججز فرص شناس ہیں،حکومت کی کوشش ہے کہ ہم ان سے ویڈیو نا مانگیں، اب ہم حکومت کو بھاگنے نہیں دیں گے،ہم انصاف حاصل کرنے کی جنگ لڑرہے ہیں اور جیتیں گے،ہمیں عدالتوں سے انصاف مل رہا ہے، روزانہ بے گناہ افراد رہا ہورہے ہیں،مسلم لیگ (ن)کے تمام راہنما بھی رہا ہوں گے،ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ سرعام پھانسی کی کل کی قرار داد پی ٹی آئی کے لئے پھٹکار ہے،اتحادیوں سے بھی ملک کے 22 کروڑ عوام ناراض ہیں،جو حکومت کو جتنی جلدی چھوڑے گا اچھا ہوگا،ہم چاہتے ہیں پوری اپوزیشن کو اعتماد میں لیں، اپوزیشن مشترکہ لائحہ عمل بنائے گی،انہوں نے مزید کہا کہ مریم نواز کے خلاف بے بنیاد مقدمہ بنایا گیا، مریم اس وقت ضمانت پر ہیں،ان کانام ای سی ایل میں شامل کرناغیر قانونی ہے،انتظامی حکم کے تحت ان کاکسی کو روکنے کے لئے حق نہیں بنتا،مریم نواز کا بیٹی ہونے کے ناطے میاں نوازشریف کے پاس ہونا لازمی ہے،وزیراعظم کی اے ٹی ایمْ نے کروڑوں کا ڈاکہ عوام کی جیبوں پر ڈالا ہے،آٹا مہنگا کر کے عوام سے ساتھ بدترین انتقام لیا گیا،مولانا،بلاول اور ہم سب اکٹھے بیٹھیں گے اور مشترکہ لائحہ عمل لائیں گے،انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ اسحاق ڈار کے گھر کو پناہ گاہ بنانا بدترین انتقام ہے،شاہد خاقان عباسی، خواجہ برادران سمیت دیگر لوگوں کو بھی ضمانت ملے گی،جو منشیات مجھ پر ڈالی اس سے دوائی بنائیں،وزیراعظم اور وزرا وہ دوا کھائیں اور ٹیکے لگوائیں جن سے حوریں نظر آتی ہیں۔

گفتگو

مزید : صفحہ آخر