معاشرے میں امن کیلئے تنازعات کا فوری حل انتہائی ضروری: ریاض فتیانہ

  معاشرے میں امن کیلئے تنازعات کا فوری حل انتہائی ضروری: ریاض فتیانہ

  



ملتان (سپیشل رپورٹر،سٹاف رپورٹر) رکن قومی اسمبلی، چیئرمین سٹینڈنگ کمیٹی لاء اینڈ جسٹس وکنوینر پائیدار ترقیاتی اہداف ریاض فتیانہ نے کہا ہے کہ اختلافات زندگی کا (بقیہ نمبر37صفحہ7پر)

حسن ہیں لیکن اختلاف کو لڑائی جھگڑے میں بدلنا کسی صورت قابل قبول نہیں۔ تنازعات عالمگیر ہوتے ہیں لیکن اس یہ قطعی مطلب نہیں کہ ہم مسلسل عداوت کی حالت میں رہتے ہوئے معاشرے میں بدامنی کو فروغ دیں۔اس کے لئے جلد از جلد تنازع کو حل کرنے کی کوشش کی جائے تاکہ امن قائم ہو اور اس مقصد کے لئے نوجوانوں کا کردار اہم تر ین ہوسکتا ہے۔ اس ضمن میں حکومت تعلیمی اداروں میں اس کوشش کی عملی حوصلہ افزائی کررہی ہے جس کے تحت قیام امن میں حائل رکاوٹوں کو دور کرکے ہمہ قسم تنازعات کو حل کیا جائے گا۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار گزشتہ روز بہاولدین زکریا یونیورسٹی ملتان کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹرمنصور اکبر کنڈی کیساتھ خصوصی ملاقات کے دوران کیا۔ اس موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹرمنصور اکبر کنڈی نے کہا کہ امن اور زندگی کو ایکدوسرے سے الگ نہیں کیا جاسکتا۔ تعلیم ِ امن اس بات کا تقاضا کرتی ہے کہ طالبعلم کو آداب کے دائرے میں رہتے ہوئے سوال کرنے کا موقع دیا جائے‘ یہ ایک طرح کا شراکتی انداز تدریس ہے اور اس عمل سے طالبعلم عملی تجربہ سے بھی ہمکنار ہوگا۔زکریا یونیورسٹی معاشرے میں قیام امن کو فروغ دینے کے لئے ہر ممکن تعاون کرنے کو تیار ہے۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ قیام امن کا یہ سلسلہ جاری رہے اور ہم سب آدابِ اختلاف کے اصولوں پر عمل پیرا ہوکر رواداری اور پر امن بقائے باہمی کا عملی مظاہرہ کرتے ہوئے متحد و منظم رہیں۔ اس موقع پر پروفیسر عابد کھرل، ڈاکٹر طاہر محمود، بینش سلیم اور مہدی حسن بھی موجود تھے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر