کرونا وائرس روکنے کا سامان غیر رجسٹرڈ، مرض پھیلنے کاخدشہ

کرونا وائرس روکنے کا سامان غیر رجسٹرڈ، مرض پھیلنے کاخدشہ

  



ملتان (وقا ئع نگار) حکومتی عدم توجہی کے باعث نشتر ہسپتال میں کرونا وائرس کے شبہ میں  زیر علاج دو مریضوں کی ٹیسٹ رپورٹس کا رزلٹ آنا مشکل مرحلہ ہوگیا۔جبک ائسولیشن وارڈ میں داخل دونوں مریضوں کی حالت بہتر ہوگئی ہے۔واضح رہے نشتر ہسپتال کے ائی(بقیہ نمبر38صفحہ7پر)

سی یو وارڈ میں ملتان کے رہائشی عدنان اور عابد کو داخل کروایا گیا ہے۔جن کے خون کے نمونے برائے تجزیہ نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ اسلام آباد بھیجوا دیئے گئے ہیں۔اور رزلٹ کا انتظار کیا جارہا ہے۔ ذرائع کے مطابق کچھ عرصہ قبل ڈسچارج ہونے والے چینی باشندہ۔ اور رحمت علی کو صحت مند ہونے پر ڈسچارج تو کر دیا گیا ہے۔ مگر انکی اور زیر علاج مریضوں کی ٹیسٹ رپورٹس کا ابھی تک رزلٹ نہیں آیا۔ کرونا وائرس کو روکنے کا سامان غیر رجسٹرڈ ہے جس سے، وائرس پھیلنے کا خدشہ ہے ڈریپ میڈیکل ڈیوائس کو رجسٹرڈ کرنے میں سست روی کا شکار ہے۔ سٹیتھو سکوپ، ا?لہ بلڈ پریشر، شوگر گلوکو میٹر غیر رجسٹرڈ۔پاکستان میں این نائن فائیو نامی کمپنی کرونا وائرس سے بچاو کے لئے نہ ماسک بنا رہی ہے اور نہ ہی ابھی تک پاکستان میں رجسٹرڈ ہوئی ہے جس کے پیش نظر کورونا وائرس کے خطرات زیادہ ہو سکتے۔

خدشہ

مزید : ملتان صفحہ آخر