جماعت اسلامی ملتان کے زیراہتمام یکجہتی کشمیر سیمینار،ریلی

        جماعت اسلامی ملتان کے زیراہتمام یکجہتی کشمیر سیمینار،ریلی

  



ملتان (سپیشل رپورٹر)جماعت اسلامی ضلع ملتان کے زیر اہتمام یکجہتی کشمیر کے سلسلے میں ”تحریک آزادی کشمیر اور ہماری ذمہ داریاں“ سیمینار کا اہتمام کیا گیا۔آزادی کشمیر سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان وسینیٹر جنرل ملی یکجہتی کونسل(بقیہ نمبر40صفحہ7پر)

لیاقت بلوچ نے کہا کہ کشمیریوں کے عزم و حوصلے کے مقابلے میں بھارت شکست کھائے گا۔ کشمیر کی آزادی نوشتہ دیوار ہے پاکستانی حکمران ٹرمپ کی ثالثی کو قبول کرنے کی بجائے کشمیر پر قومی پالیسی تشکیل دیں اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق کشمیریوں کو حق خود ارادیت ملنا چاہئے۔5اگست کے بعد سے مقبوضہ کشمیر کو قید خانے میں تبدیل کردیا گیا ہے ہزاروں نوجوانوں کو شہید، نابینا، خواتین کی عصمت دری کی گئی ہے مگر اس کے باوجود کشمیریوں کے حوصلے بلند ہیں 5فروری کو پوری پاکستانی قوم کشمیری پاکستان سمیت دنیا بھر میں سڑکوں پر نکل کو کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی اور بھارتی ظلم وجبر کے احتجاج کے خلاف احتجاج کریں گے۔ قوم میں یہ تاثر کیوں پیدا ہورہا ہے کہ کشمیر کا سودا کرلیا گیا اور کشمیریوں کو تنہا چھوڑ دیا گیا ہے؟ انہوں نے کہا کہ 9/11 کے بعد جس ذلت کا سامنا پاکستان کو کرنا پڑا ہے اس کے بعد بھی کشمیر پر امریکہ کی ثالثی کو قبول کرنا انتہائی افسوسناک اور قوم کے ساتھ زیادتی ہے۔370اور35-A کے خاتمے کے بعد مودی سندھ طاس معاہدے کو ختم کرنے کی دھمکی دے رہا ہے پاکستانی دریاؤں کا پانی بند کرکے پاکستان کی زمینوں کو بنجر بنانے کی باتیں کررہا ہے مگر ہمارے حکمران خواب غفلت میں پڑے ہوئے ہیں وہ سمجھتے ہیں امریکہ کشمیر کا مسئلہ حل کروائے گا۔ مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے بھارت نے قوام متحدہ کی قرار دادوں کی خلاف ورزی کی ہے۔ اگر سلامتی کونسل کا بھارت کوممبر بنواکر خود اپنے پیروں پر کلہاڑی ماری ہے۔ شہریت کے قانون میں ترمیم کے خلاف بھارت کے مسلمان ہی نہیں انصاف پسند ہندو اور اقلیتیں سراپا احتجاج ہیں پاکستان کو اس کا فائدہ اُٹھانا چاہئے عالمی سطح پر مسئلہ کو اُجاگر کرنے اور حمایت حاصل کرنے کیلئے وزارت خارجہ اور سفارتی عملے کو متحرک کرے مسئلہ پر قومی پالیسی بنا کر ٹھوس اقدامات کرے اور قوم کو متحد کرے اس کیلئے لیڈر شپ کا بڑا وژن ہونے کی ضرورت ہے اقتصادی، معاشی استحاکم کیلئے آئی ایم ایف کے پاس جانے اور دنیا بھر میں کشکول لے کر پھرنے کی بجائے خود انحصاری پر عمل کریں۔ مظلوم کشمیریوں کی حمایت کیلئے مقبوضہ کشمیر جانے والے کو غدار پاکستان دشمن کہنے سے مسئلہ حل نہیں ہوگا نوجوان کب تک مظلوم کشمیریوں کا لہو لیتا ہوا اور کشمیری ماؤں، بہنوں کی عصمت کو تار تار ہونے کو کب تک برداشت کرے گا۔ حکمران جرات کا مظاہرہ کریں۔بزرگ سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ کشمیر ہمارا ہے اپنا سمجھ کر ہی یہ لڑائی ملڑنی چاہئے اسی صورت میں ہم کشمیر کو آزاد اور اپنا دفاع کرسکتے ہیں کشمیری آزادی کی جنگ ہی نہیں بلکہ پاکستان کی بقاء کی جنگ لڑ رہے ہیں کشمیر کت بغیر پاکستان نا مکمل ہے پاکستان کو کھل کر تحریک آزادی کشمیر کی حمایت کرنی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں نے اپنی جان ومال، عزت سمیت ہر چیز کی قربانی دی ہے پاکستان نے اب تک کیا قربانی دی ہے؟ان کی جدوجہد آزادی کی سرکاری سطح پر حمایت کرنی چاہئے۔امیر جماعت اسلامی پاکستان سینٹر سراج الحق کی اپیل پر پاکستان اور بیرون ممالک کشمیر پر بھارتی ناجائز اور غاصبانہ قبضے کے خلاف اور بھارتی تسلط سے آزادی کے لیے کشمیریوں کی تحریک آزادی اور مظلوم کشمیریوں سے یکجہتی کے اظہار اور بھارتی ظلم و جبر کے خلاف پاکستانیوں اور کشمیریوں نے بھر پور 5 فروری کے دن کو یوم یکجہتی کے طور پر منایا۔ جلسے جلوس ریلیوں اور سیمینارز کا انعقاد کیا گیا۔ انسانی ہاتھوں کی زنجیر بنائی گئی۔ اسی طرح ملک کے دیگر حصوں کی طرح جنوبی پنجاب میں بھی یوم یکجہتی کشمیر کو نئے جذبے اور ولولے سے منایا گیا۔ امیر جماعت اسلامی صوبہ جنوبی پنجاب راؤ محمد ظفر نے ملتان ریلی کی قیادت کی جبکہ وہاڑی میں صوبائی نائب امیر میاں آصف محمود اخوانی،ضلعی امیر سید جاوید حسین شاہ بہاولپور میں مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل اظہر اقبال حسن اور صوبائی نائب امیر سید ذیشان اختر،رحیم یار خان میں مرکزی نائب امیر ڈاکٹر فرید احمد پراچہ، ڈاکٹر انوار الحق، لیہ میں صوبائی نائب امیر چوہدری اصغر علی گجر،مظفر گڑھ میں صوبائی سیکرٹری جنرل صہیب عمار صدیقی اور پروفیسر افتخار ہاشمی،ڈیرہ غازی خان میں صوبائی ڈپٹی سیکرٹری جنرل پروفیسر عطا محمد جعفری جاوید اقبال بلوچ شیخ عثمان فاروق کی قیادت میں یکجہتی کشمیر ریلیاں نکالی گئیں۔ملتان میں دولت گیٹ سے گھنٹہ گھر چوک تک امیر جماعت اسلامی جنوبی پنجاب راؤ محمدظفر، ضلعی امیر ڈاکٹر صفدر اقبال ہاشمی، ضلعی سیکرٹری جنرل چوہدری اطہر عزیز ایڈووکیٹ، الخدمت فاؤنڈیشن کے صوبائی صدر ڈاکٹر اشرف علی عتیق اور جمعیت اتحاد العلماء کے صوبائی صدر مولانا عبد الرزاق،جے آئی یوتھ کے ضلعی صدر فرحال احمد ملک نے قیادت کی۔ شرکاء ریلی میں جماعت اسلامی پاکستان اور کشمیر کے پرچم اور بینرز اٹھا رکھے تھے۔ ریلی کے شرکاء نے بھارت کے خلاف اور کشمیریوں کے حق میں نعرے لگائے۔ تاجروں اور دکانداروں نے وکٹری کا نشان بنا کر ریلی کا استقبال کیا۔ ریلی چوک گھنٹہ گھر پہنچ کر ایک جلسے کی شکل اختیار کر گئی۔ راؤ محمد ظفر نے ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر پاکستان کا نامکمل ایجنڈا ہے اس نامکمل ایجنڈے کی تکمیل کی خاطر کشمیر ی اپنی جانوں کے نذرانے پیش کر رہے ہیں۔ کشمیریوں کی مدد پاکستان کی بقا کے لیے ضروری ہے۔ بھارت کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے اور ہڑپ کرنے کے بعد پاکستان کے دریاؤں کا پانی بند کرنے اور پاکستان کی زمینوں کو بنجر بنانے کی دھمکیاں دے رہا ہے۔ ہمیں ان کی دھمکیوں کو سنجیدگی سے لینا چاہیے اور بھارت کو منہ توڑ جواب دیا جائے۔ 5 اگست کے بعد سے مقبوضہ کشمیر میں کرفیو نافذ ہے۔ اور عملاََ پوری وادی کو جیل میں تبدیل کر دیا گیا ہے۔ جس کا جیلر مودی ہے۔ کشمیری عوام کو نہ خوراک نہ ادویات اور نہ انٹرنیٹ کی سہولیات دستیاب ہے کہ وہ کسی سے رابطہ کر سکیں۔اور وہ بھوک اور پیاس اور ادویات کے نہ ہونے کی وجہ سے مر رہے ہیں اور ان کو دفنانے کی بھی اجازت نہیں وہ اپنے پیاروں کو گھروں میں دفنانے پر مجبور ہیں۔ اس بھارتی ظلم و جبر اور بربریت پر انسانی حقوق کے علمبردار عالمی ادارے اور ممالک خصوصاََ پاکستان اور مسلم ممالک کی خاموشی قابل افسوس اور قابل مذمت ہے۔ پاکستان خود کوئی عملی اقدام کرنے کی بجائے ٹرمپ کی طرف دیکھ رہے ہیں کہ وہی آکر کشمیر کا مسئلہ حل کر وائے گا۔ نہ انہوں نے پہلے حل کروایا اور نہ اب کروائیں گے۔ اور نہ ہی پاکستانی قوم ٹرمپ کی ثالثی کو قبول کرے گی۔ جماعت اسلامی اور پاکستان قوم کشمیریوں کو تنہا نہیں چھوڑیں گے اور کشمیر کو آزاد کروا کر ہی دم لیں گے۔ امیر جماعت اسلامی ضلع ملتان ڈاکٹر صفدر اقبال ہاشمی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیریوں نے اپنی جانیں قربان کر کے مسئلہ کشمیر کو عالمی سطح پر اجاگر کیا ہے انہوں نے کہا کہ بھارت کا سیکولر چہرہ بے نقاب ہو گیا ہے۔ جماعت اسلامی اور پاکستانی قوم تحریک آزادی کشمیر کی پشتیبان ہے اگر حکمرانون نے مسئلہ کشمیر پر سودے بازی کرنے کی کوشش کی قوم انہیں ایک دن بھی اقتدار میں برداشت نہیں کریں گی۔ انہوں نے کہا کہ بانی جماعت مولانا سید ابوالاعلیٰ مودودی ؒ نے اس وقت کہا تھا کہ مسئلہ کشمیر کا واحد حل جہاد ہے اور یہ جہاد کے ذریعہ ہی حل ہو گا۔ حکمرانوں کو جہاد کا اعلان کرنا چاہیے۔ریلی سے چوہدری اطہر عزیز ایڈووکیٹ، علامہ اقتدار حسین نقوی،کنور محمد صدیق، ڈاکٹر حفیظ انور،شیخ اسرار حسین صدیقی،چوہدری محمد امین،عبد الرحمن حیدری فرحال احمد ملک نے بھی خطاب کیا۔ اختتام سے قبل انسانی ہاتھوں کی زنجیر بنائی گئی۔

ریلی

مزید : ملتان صفحہ آخر