پانی کی غلط تقسیم ہوئی توویال میں پانی نہیں خون بہے گا، بنوں مشران کا اعلان

پانی کی غلط تقسیم ہوئی توویال میں پانی نہیں خون بہے گا، بنوں مشران کا اعلان

  

بنوں (بیوروپورٹ)ویال سنگاری کے پانی کی تقسیم پر مختلف اقوام کے مابین خونیں تصادم کا خطرہ پیدا ہوگیا ممہ خیل،نورڑ،بارکزئی،ہوید،لنڈیڈاک اور دیگر علاقوں کے اقوام کے سینکڑوں مشران نے اعلان کیا ہے کہ ویال سنگاری سے ککی اقوام کیلئے ہماری مرضی کے بغیر ویال گزاری گئی تو اس ویال میں پانی نہیں بلکہ خون بہے گا اور آج ہم نے فیصلہ کرلیا ہے کہ جانیں دیں گے لیکن اپنے آنے والی نسلوں کو تباہی سے بچانے کیلئے ویال سنگاری سے غیر منصفانہ تقسیم کی کوشش ناکام بنادیں گے اور جانی نقصان کی ذمہ داری ڈپٹی کمشنر بنوں پر ہوگی ان خیالات کا اظہار مذکوراہ بالا علاقوں کے سینکڑوں مشران کے گرینڈ قومی جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے سابق صوبائی اسمبلی کے امیدوار حاجی وقار خان،سابقہ تحصیل کونبسلر پیر کمال شاہ،ملک عباس علی خان،زاہد ایڈوکیٹ،مفتی ظفریاب،طاہر خان،امیر محمد خان،مک انور علی ودیگر مشران نے کیا اس موقع پر صوبائی وزیر ٹرانسپورٹ ملک شاہ محمد خان کے بھائی اور پاکستان تحریک انصاف کے رہنما ملک گلباز خان نے موقع پر پہنچ کر جرگہ کے مشران کو یقین دلایا کہ میریان اور ککی قوم کے عوام ہمارے بھائی ہیں اور ہم کسی کو بھی دوسرے حلقہ کے عوام کے حقوق پر ڈاکہ ڈالنے کی اجازت نہیں دیں گے ہم آج ہی ویال سنگاری سے ویال کی تعمیر پر کام بند کرائیں گے اور جب تک دونوں اقوام کو اعتماد میں لیکر قانون اور رواج آپباشی کے مطابق تمام اقاما کا ان جائز حق نہیں دیاجاتا کسی صورت کام نہیں کرنے دیں گے کوئی بھی یہ خواب نہ دیکھے کہ ملک شاہ محمد خان کے ہوتے ہوئے وہ کسی دوسرے کا حق چھینیں گے جب تک تمام قوموں کے مابین مسئلے کا پر امن حل تلاش نہیں کیا جاتا اس وقت تک ویال کے پانی کی تقسیم پر کوئی کام نہیں مہوگا ورنہ قوموں کے مابین خونریز تصادم کی ذمہ داری ذمہ دار حکام پر ہوگی ککی کے عوام بھی ہمارے بھائی ہیں اگر پانی پر ان کا حق بنتا ہے تو اسے ضرور ملے گا اور کسی قوم کو بھی دوسری قوم کا حق نہیں دیں گے اس سلسلے میں سوموار کو ڈپٹی کمشنر کے ساتھ مشران کی کمیٹی کے ہمراہ تفصیلی جرگہ کریں گے ارو یہ معاملہ قانون اور رواج آبپاشی کے مطابق حل کرائیں گے۔اس موقع پر مشران نے اعلان کیا کہ اگر فوری طور پر ویال پر کام بند نہ کیا گیا تو قوم کے ہزاروں افراد مسلح موقع پر جاکر زبردستی کام بند کرائیں گے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -