مالی سال کے پہلے 7ماہ میں تجارتی خسارہ 28فیصدکم

مالی سال کے پہلے 7ماہ میں تجارتی خسارہ 28فیصدکم

  



ملتان (نیوز رپورٹر) ادارہ شماریات پاکستان کے مطابق مالی سال 2019-20 کے پہلے سات ماہ میں تجارتی خسارہ (درآمدات اور برآمدات کا فرق)گزشتہ برس کی نسبت 28 فیصد کم ہوا ہے۔رواں مالی سال کے پہلے سات ماہ میں 13 ارب 50کروڑ ڈالر کی (بقیہ نمبر17صفحہ12پر)

برآمدات ہوئیں جب کہ گزشتہ مالی سال اس عرصہ میں 13 ارب 22 کروڑ ڈالر کی برآمدات ہوئی تھیں۔ رواں برس برآمدات 2.14 فیصداضافے سے 28 کروڑ 20 لاکھ ڈالرز اضافی رہیں۔ ملکی درآمدات گزشتہ سات ماہ کے دوران 27 ارب 25 کروڑ ڈالر رہیں۔گزشتہ مالی سا ل اس عرصہ میں 32 ارب 42 کروڑ ڈالر کی درآمدات ہوئی تھیں۔ درآمدات 15.95 فیصد کمی سے 5 ارب 17کروڑ ڈالر کم رہیں۔مالی سال 2019-20 کے پہلے سات ماہ میں 13 ارب 75 کروڑ ڈالر کا تجارتی خسارہ ہوا جب کہ گزشتہ سال اس عرصہ میں 19 ارب 20 کروڑ ڈالر کا تجارتی خسارہ ہوا تھا۔ اس سال تجارتی خسارہ 40۔28 فیصد کمی سے 5 ارب 45 کروڑ ڈالر کم رہا۔ رواں مالی سال کے پہلے 7 ماہ کے دوران مختلف برآمدات 5۔18 فیصد اضافے سے51 کروڑ 70 لاکھ ڈالر تک پہنچ گئی ہے اس میں سے بڑا حصہ سافٹ وئیر کنسلٹنسی سروسز کے تحت حاصل ہوا جس کی برآمدات 12 فیصد اضافہ سے 15 کروڑ 90 لاکھ ڈالر ہوگئی ہیں نومبر 2019ء کے دوران پاکستان کی برآمدات 6۔9 فیصد اضافے کے ساتھ 02۔02 ارب ڈالر تک پہنچ گئی تھیں جبکہ اس دورانیے میں درآمدات میں 53۔17 فیصد کمی ہوئی اور یہ 8۔3 ارب ڈالر رہیں جولائی سے نومبر 2019ء کے دوران ملکی برآمدات 55۔ 9 ارب ڈالر رہیں جبکہ گذشتہ سال اسی عرصہ کے دوران 113۔ 9 ارب ڈالر کی برآمدات کی گئی تھیں اسی طرح اس دورانیے میں 7۔43 کروڑ ڈالر یعنی 8۔ 4 فیصد برآمدات میں اضافہ ہوا جبکہ درآمدات میں 27۔19 فیصد یعنی 546۔4 ارب ڈالر کی کمی ہوئی۔

خسارہ

مزید : ملتان صفحہ آخر