کروناوائرس نے ’سارس‘ کاریکارڈ توڑدیا،ہلاکتوں کی نئی تعدادجان کر آپ بھی دکھی ہوجائیں گے

کروناوائرس نے ’سارس‘ کاریکارڈ توڑدیا،ہلاکتوں کی نئی تعدادجان کر آپ بھی ...
کروناوائرس نے ’سارس‘ کاریکارڈ توڑدیا،ہلاکتوں کی نئی تعدادجان کر آپ بھی دکھی ہوجائیں گے

  



بیجنگ(ڈیلی پاکستان آن لائن)چین میں کرونا وائرس سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 811ہوگئی ہے جس کے بعد کرونا وائرس سارس سے زیادہ انسانی جانیں نگلنے والا وائرس بن گیاہے۔

خبررساں ادارے رائٹرز کے مطابق سارس وائرس کی وبا 2002سے2003کے درمیان پھیلی تھی اور اس سے دنیا بھر میں 774افراد ہلاک جبکہ 8ہزار سے زائد افرادمتاثرہوئے تھے۔چین کے محکمہ صحت کے مطابق کرونا وائرس سے ہر گزرتے دن ہلاکتوں کی تعداد پہلے سے بڑھ رہی ہے، گزشتہ روز (ہفتہ کو)مزید 89افراد لقمہ اجل بنے جس سے مجموعی تعداد811ہوگئی ہے جبکہ 37,198افراد میں اس وائرس کی تصدیق کی گئی ہے۔ تاہم حکام کا کہناہے کہ ہفتے کو 26سوسے3ہزار کے درمیان لوگوں میں اس وائرس کی تشخیص ہوئی جو کہ یکم فروری کے بعد سامنے آنے والی سب سے کم تعداد ہے۔

کرونا وائرس کے باعث چین بھرکے عوام میں اضطراب پایاجاتا ہے لاکھوں لوگ گھروں میں محصور ہوکررہ گئے ہیں۔ خصوصا وہ لوگ زیادہ پریشان ہیں جو دنیا کے مختلف حصوں میں کام کرتے تھے اور چین کے قمری سال کی خوشیوں میں شرکت کیلئے اپنے وطن واپس آئے تھے اور اب ان کی واپسی میں مسلسل تاخیر ہورہی ہے۔

وائرس کو مزید پھیلنے سے روکنے کیلئے چینی حکومت نے ملک بھر کے کاروباری اداروں اور کمپنیوں کوہدایت کی ہے کہ وہ نئے سال کی چھٹیوں میں مزید دس دن کا اضافہ کردیں۔ وائرس کے باعث چین کے کئی مصروف شہر اب ویران پڑے ہیں۔فیکٹریاں، بازار، سکولز اور کئی دیگر ادارے وبا کے پھیلاو کے بعد سے بند پڑے ہیں۔

دنیا کی دوسری بڑی معیشت میں کاروبار کی مندی ہوچکی ہے جس کے اثرات ملک بھرمیں محسوس کئے جارہے ہیں۔سونے ، ڈالرز ،بانڈز اور جاپانی ین کے کاروبار سے منسلک لوگوں نے اپنے سرمائے کو محفوظ کرنا شروع کردیا ہے۔کئی ورکشاپ پیر کو بھی بندرہیں گی جبکہ وائٹ کالرز ملازموں کو گھر سے بیٹھ کر کام کرنے کی ہدایات کی گئی ہیں۔

مزید : اہم خبریں /بین الاقوامی