مہنگائی کی وجہ ہمارےمشکل فیصلے ہیں، آئندہ دنوں میں مہنگائی کا طوفان دم توڑ جائے گا:حماد اظہر

مہنگائی کی وجہ ہمارےمشکل فیصلے ہیں، آئندہ دنوں میں مہنگائی کا طوفان دم توڑ ...
مہنگائی کی وجہ ہمارےمشکل فیصلے ہیں، آئندہ دنوں میں مہنگائی کا طوفان دم توڑ جائے گا:حماد اظہر

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی وزیراقتصادی امور حماداظہر نے کہا کہ چیزوں کی قیمتیں بڑھانا حکومتی ناکامی نہیں، مہنگائی کا احساس ہے مگر اس وجہ سے گھبراہٹ نہیں، چند دنوں میں سبزیوں کی قیمتوں میں مزید کمی آئے گی، مہنگائی کی وجہ ہمارے مشکل فیصلے ہیں،اگر ہم یہ فیصلے نہ کرتے تو معیشت سمیت حکومت کے بہت سے محکمے دیوالیہ ہو جاتے،یہ فیصلے خوش دلی سے نہیں مجبوری سے کر رہے ہیں،اشیائے ضروریہ کی قیمتیں کم ہیں لیکن کچھ مڈل مین قیمتیں منصوعی طور پر بڑھا رہے ہیں اس کی تحقیقات کر رہے ہیں،آنے والے دنوں میں مہنگائی کا طوفان دم توڑ جائے گا، ہمارے اقدامات عوام کے سامنے آئیں گے، سٹیٹ بینک کی رپورٹ بھی ہے کہ آنے والے دنوں میں مہنگائی کی شرح میں کمی ہو گی،روپے کی قدر میں کمی کے معاملے میں پی ٹی آئی کا کوئی عمل دخل شامل نہیں،گندم، چینی، آٹا، ٹیکسٹائل اور دیگر شعبوں میں بھی مافیا موجود ہے ۔

نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیراقتصادی امور حماداظہر نے کہا کہ صوبوں کے ساتھ مل کر ذخیرہ اندوزوں کے خلاف مزید موثرکارروائی کی جائے گی،ذخیرہ اندوزوں کے خلاف کارروائی نہ ہوئی تو انتظامی ناکامی ہو گی، مافیا ایک یا دو اشخاص کا نام نہیں، گندم، چینی، آٹا، ٹیکسٹائل اور دیگر شعبوں میں بھی مافیا موجود ہے، آنے والے دنوں میں مہنگائی کا طوفان دم توڑ جائے گا، ہمارے اقدامات عوام کے سامنے آئیں گے،سٹیٹ بینک کی رپورٹ بھی ہے کہ آنے والے دنوں میں مہنگائی کی شرح میں کمی ہو گی۔انہوں نے کہا کہ ماضی میں بھی چینی و آٹے کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے، سٹیٹ بینک نے روپے کی قدر میں کمی کی کیونکہ ہمارے پاس فارن ریزور بہت کم رہ گئے تھے، گیس اور بجلی کی قیمتوں میں اضافہ کرنا پڑا اگر نہ کرتے تو سرکولر ڈیٹ چار گنا سے بھی زیادہ ہو جاتا، روپے کی قدر میں جو کمی ہوئی اس میں پی ٹی آئی کا کوئی عمل دخل شامل نہیں، اس کی وجہ ماضی کی حکومتوں کا دیا گیا خسارہ ہے،سابق وزیر خزانہ خود کہہ چکے ہیں کہ اس وقت معیشت کو بیل آؤٹ کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ روپے کی قدر میں کمی آئی ایم ایف میں جانے سے پہلے ہوئی، لوگوں کا یہ کہنا تھا کہ حکومت نے آئی ایم ایف سے ڈالر ریٹ دو سو روپے طے کر لیا ہے جو صرف افواہ ثابت ہوئی،اب روپے کو اپنے مارکیٹ ریٹ پر آنا ہی تھا۔

انہوں نے کہا کہ جو خسارہ ن لیگ اور پیپلز پارٹی کوملے اگر وہ ہمیں ملے ہوتے تو ہم پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ نہ کرتے،تیل و گیس کی قیمتیں بڑھانا کسی بھی حکومت کے لئے مشکل ہے، اسی سے مہنگائی بڑھتی ہے، ہم یہ فیصلے خوش دلی سے نہیں مجبوری سے کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی طرف سے اشیائے ضروریہ کی قیمتیں کم ہیں لیکن کچھ مڈل مین قیمتیں بڑھا رہے ہیں اس کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

مزید : قومی