خاتون ملازم سے پارلیمنٹ میں زیادتی ، آسٹریلوی وزیر اعظم نے معافی مانگ لی

خاتون ملازم سے پارلیمنٹ میں زیادتی ، آسٹریلوی وزیر اعظم نے معافی مانگ لی
خاتون ملازم سے پارلیمنٹ میں زیادتی ، آسٹریلوی وزیر اعظم نے معافی مانگ لی
سورس: Facebook

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کینبرا (ڈیلی پاکستان آن لائن) آسٹریلیا کے وزیر اعظم سکاٹ موریسن نے  ایک سابق خاتون ملازم کا پارلیمنٹ میں ریپ ہونے کے واقعے پر معافی مانگ لی۔

پارلیمنٹ کے سیشن سے خطاب کرتے ہوئے آسٹریلوی وزیر اعظم نے کہا " میں معافی چاہتا ہوں، ہم سب معافی مانگتے ہیں، میں مس ہگنز سے ان کے ساتھ پیش آنے والے واقعے پر معافی مانگتا ہوں۔" انہوں نے زیادتی کا نشانہ بننے والی خاتون ملازم کی تعریف کی اور کہا کہ پارلیمنٹ کو ایک ایسی جگہ ہونا چاہیے جہاں تحفظ کا احساس ہو لیکن یہ بہت سے لوگوں کیلئے ڈراؤنا خواب بن گئی۔

الجزیرہ ٹی وی کے مطابق آسٹریلین پارلیمنٹ کی سابق خاتون ملازم برٹنی ہگنز نے الزام عائد کیا تھا کہ سنہ 2019 کے انتخابات  سے کچھ ہفتے پہلے ان کے ساتھ ان کے ایک سینئر کولیگ نے وزیر کے سرکاری گھر میں جنسی زیادتی کی۔ واقعہ سامنے آنے کے بعد معاملے کی تحقیقات کی گئیں تو یہ بات سامنے آئی کہ پارلیمنٹ میں کام کرنے والے 37 فیصد ملازمین کو ہراسانی اور 33 فیصد کو جنسی ہراسانی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔