اگر آپ کا بھی دل ٹوٹا ہے تو آپ کو صرف۔۔۔

اگر آپ کا بھی دل ٹوٹا ہے تو آپ کو صرف۔۔۔
اگر آپ کا بھی دل ٹوٹا ہے تو آپ کو صرف۔۔۔

  



برمنگھم (نیوز ڈیسک) دل ٹوٹنا ایک عام پائی جانے والی بیماری ہے جس کا شکار ہر انسان کبھی نہ کبھی ضرور ہوجاتا ہے۔ اگرچہ عام طور پر یہی سمجھا جاتا ہے کہ ٹوٹے دل کو قرار آنا ممکن نہیں ہوتا مگر ایک تازہ سائنسی تحقیق کا کہنا ہے کہ تقریباً تین ماہ میں ہی دل کو قرار آجاتا ہے اور اس صدمے کا شکار ہونے والے پہلے سے بہتر اور مضبوط شخصیت بن کر ابھرتے ہیں۔

دریا دل سعودی باشندے کا قابل تحسین اقدام،لوگوں کی ڈھیروں دعائیں ،جاننے کیلئے کلک کریں

اس تحقیق کیلئے 18 سال سے زائد عمر کے 1881 ایسے افراد کا مطالعہ کیا گیا کہ جن کا رومانوی تعلق حال ہی میں ختم ہوا تھا۔ تحقیق میں شامل 71 فیصد افراد نے بتایا کہ انہوں نے اس افسوسناک تجربے سے بہت کچھ سیکھا، انہیں اپنے بارے میں جاننے کا موقع ملا، وہ اب بامقصد زندگی گزارنے کا تہیہ کرچکے تھے اور ان کایہ بھی کہنا تھا کہ وہ ایک بہتر شخص بن چکے تھے۔ یہ لوگ جذباتی لحاظ سے بھی بہتر اور متوازن ہوچکے تھے اور ان کے خیالات پہلے سے مثبت ہوچکے تھے۔

 تحقیق میں یہ بھی معلوم ہوا کہ دل ٹوٹنے کے واقعات سب سے زیادہ جنوری کے مہینے میں ہوتے ہیں کیونکہ اکثر لوگ نئی زندگی کا آغاز کرنا چاہ رہے ہوتے ہیں اور نئے ساتھی ڈھونڈلیتے ہیں۔ تحقیق کاروں کے مطابق اس مہینے میں تقریباً 20 فیصد لوگوں کا رومانوی تعلق اختتام کو پہنچ جاتا ہے۔ یہ تحقیق سائنسی جریدے "Positive Psyshology" میں شائع کی گئی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...