انسانی فضلے سے بنا پانی، بل گیٹس نے متعارف کروادیا

انسانی فضلے سے بنا پانی، بل گیٹس نے متعارف کروادیا
انسانی فضلے سے بنا پانی، بل گیٹس نے متعارف کروادیا

  

نیویارک (نیوز ڈیسک) کہتے ہیں کہ کسی کا کوڑا کسی دوسرے کیلئے خزانہ ثابت ہوسکتا ہے اور امریکی ارب پتی اور مائیکرو سافٹ کے بانی بل گیٹس کے فلاحی ادارے کی مدد سے انسانی فضلے سے صاف پینے کا پانی حاصل کرنے والی مشین بنا کر یہ بات سچ ثابت کردی گئی ہے۔ مائیکرو سافٹ کے بانی نے اس پانی کا تازہ گلاس پی کر اس کے مزیدار اور صحت بخش ہونے کا اعلان کردیا ہے بلکہ ان کا کہنا ہے کہ یہ اتنا صاف ستھرا اور اچھا ہے کہ وہ روزانہ اسے پینا چاہیں گے۔

بل گیٹس افریقی ممالک میں غریب لوگوں کی صاف پانی سے محرومی پر متفکر تھے اور ان کی مدد کرنا چاہتے تھے۔ ان کے فلاحی ادارے ”گیٹس فاﺅنڈیشن“ کی طرف سے سائنسدانوں کو دعوت دی گئی تھی کہ وہ پسماندہ افریقی علاقوں میں صاف پانی کی فراہمی کیلئے کوئی حل ڈھونڈیں۔ بالآخر ایک امریکی کمپنی نے OmniProcessor نامی ایک پلانٹ تیار کیا ہے جو انسانی فضلے کو ابال کر اس کی بھاپ سے صاف پانی حاصل کرتا ہے۔ چونکہ اس میں 1,000 ڈگری سیلسئیس کا انتہائی زیادہ درجہ حرارت استعمال کیا جاتا ہے اس لئے جراثیموں یابدبو کا کوئی خدشہ نہیں رہتا۔

مغٖربی عوام کا نیا شوق بچے" پیدا" کرنے والی ویب سائٹس بھی آ گئیں مزید جاننے کیلئے کلک کریں

 پہلا پلانٹ افریقی ممالک سینی گال کے شہر ڈاکار میں لگایا جائے گا۔ ایک پلانٹ کا خرچہ تقریباً 15 کروڑ پاکستانی روپے ہوگا۔ بل گیٹس کہتے ہیں کہ یہ پانی کسی بھی ملٹی نیشنل کمپنی کے پانی زیادہ صاف اور صحت بخش ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس