اغواءکیس میں ذکی الرحمان لکھوی کی عبوری ضمانت منظور

اغواءکیس میں ذکی الرحمان لکھوی کی عبوری ضمانت منظور

  



اسلام آباد (آن لائن)اسلام آباد کے ضلعی جوڈیشل مجسٹریٹ نے ایک افغان شہری کے اغواءکے کیس میں 2لاکھ کے مچلکوں پر ذکی الرحمان لکھوی کی عبوری ضمانت منظور کر لی ہے۔ایڈیشنل سیشن جج اور جوڈیشل مجسٹریٹ میاں محمد اظہر ندیم نے ممبئی حملہ کیس کے مرکزی ملزم ذکی الرحمن لکھوی کی افغانستان کے ایک شہری محمدانور کے اغواءکے مقدمہ کی جمعرات کو سماعت کی۔ملزم کے وکیل راجہ رضوان عباسی اور سرکار کی جانب سے پراسیکیوٹر ندیم احمد تابش پیش ہوئے جبکہ تھانہ گولڑہ کے اے ایس آئی نے ملزم ذکی الرحمن کا ریکارڈ عدالت میں پیش کیا ۔درخواست کے گزار کے وکیل نے عدالت میں دلائل دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ ذکی الرحمن کو چھ سالوں سے غیر قانونی طور پر جیل میں قید رکھا گیا ہے جبکہ انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے ذکی الرحمن لکھوی کی درخواست ضمانت منظور کرتے ہوئے رہائی کے احکامات جاری کئے تھے مگر ان کے خلاف بے بنیاد اغوا کا مقدمہ بنا دیا گیا جبکہ مقدمہ درج کرانے والوں کا کوئی ریکارڈ ہی موجود نہیں ہے، بعد ازاں ایم پی او کے تحت ملزم ذکی الرحمن لکھوی کو ایک ماہ کے لئے نظر بند کیا گیا ۔اس موقع پر سرکار کے وکیل نے کہا کہ انہوں نے ملزم ذکی الرحمان لکھوی سے جیل میں ملاقات کی کوشش کی تھی مگر انکی ملاقات نہیں ہو سکی۔دونوں وکلاءکے دلائل کے بعد ضلعی جوڈیشل مجسٹریٹ سیشن جج میاں محمد اظہر ندیم نے ذکی الرحمن کو اغواءکے مقدمے میں 2 لاکھ روپے مچلکوں کے عوض عبوری درخواست منظور کرلی،

ضمانت منظور

مزید : صفحہ آخر


loading...