خصوصی عدالت نے غداری کیس پرویز مشرف تک محدود رکھنے کی درخواست مسترد کر دی

خصوصی عدالت نے غداری کیس پرویز مشرف تک محدود رکھنے کی درخواست مسترد کر دی ...

  



       اسلام آباد(اے این این) سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کے کیس کی سماعت کرنے والی خصوصی عدالت نے استغاثہ کی جانب سے مقدمہ صرف پرویز مشرف کے خلاف چلانے اور کیس پر کارروائی آگے بڑھانے کی درخواست مسترد کر دی۔جمعرات کو جسٹس فیصل عرب کی سربراہی میں تین رکنی خصوصی عدالت نے سنگین غداری کے مقدمے کی سماعت کی۔غداری کے اس مقدمے کی سماعت کے دوران وکیل استغاثہ طارق حسن کا کہنا تھا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے صرف ان تین افراد کے خلاف کارروائی روکنے کا حکم دیا تھا جسے خصوصی عدالت نے شریک جرم کرنے کا حکم دیا تھا۔انھوں نے کہا کہ خصوصی عدالت اس مقدمے کے مرکزی ملزم پرویز مشرف کے خلاف مقدمے کی کارروائی جاری رکھ سکتی ہے۔بینچ کے سربراہ جسٹس فیصل عرب نے دوران سماعت کا کہنا تھا کہ ان کے نزدیک ملک میں تین نومبر2007 کو ملک میں ایمرجنسی لگانے کا اقدام اس وقت کے فوجی صدر پرویز مشرف کے اکیلے کا نہیں تھا۔انھوں نے کہا کہ عدالت کے سامنے پیش کیے جانے والے مواد میں بتایا گیا ہے کہ ملک میں ایمرجنسی لگانے میں ایک سے زائد افراد شریک تھے۔

خصوصی عدالت

مزید : صفحہ آخر