ہائیکورٹ نے ایف بی آر کو بینکوں کے اکاﺅنٹس کی چھان بین کرنیکی اجازت دیدی

ہائیکورٹ نے ایف بی آر کو بینکوں کے اکاﺅنٹس کی چھان بین کرنیکی اجازت دیدی

                لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے فیڈرل بورڈ آف ریونیو کو ملک بھر میں موجود بینکوں کے کھاتہ داروں کے اکاونٹس کی براہ راست چھان بین کرنے کی اجازت دے دی۔جسٹس اعجاز الاحسن نے گزشتہ روزبینکوں کی جانب سے دائردرخواستوں پر تفصیلی فیصلہ سنادیا،عدالت نے 30 صفحات پر مشتمل تفصیلی فیصلہ جاری کیا ہے ۔عدالت عالیہ میں متعدداکاونٹس ہولڈرز کے کھاتوں کی جانچ پڑتال کے خلاف متعدد بینکوں کی جانب سے درخواستیں دائر کی گئی تھیں،بینکوں کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا تھاکہ کھاتہ داروں کے اکاونٹس کی جانچ پڑتال بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ایف بی آر کے وکیل الیاس خان نے موقف اختیارکیا کہ پارلیمنٹ سے مالیاتی بل کی منظوری کے بعد ایف بی آر کھاتہ داروں کے اکاونٹس کی قانونی طور پر جانچ پڑتال کر سکتا ہے۔عدالت نے فریقین کے وکلاءکے دلائل سننے کے بعد تفصیلی فیصلہ جاری کرتے ہوئے بینکوں کی درخواستیں مسترد کر دیں۔عدالت نے فیڈرل بورڈ آف ریونیو کو بینک کھاتہ داروں کے اکاونٹس کی براہ راست جانچ پڑتال کی اجازت دے دی ۔

اجازت

مزید : صفحہ آخر