زندگی بچانے والی دس عام استعمال کی اشیاء

زندگی بچانے والی دس عام استعمال کی اشیاء
زندگی بچانے والی دس عام استعمال کی اشیاء

  

لندن (مانیڑنگ ڈیسک)انسان کو ہنگامی حالات میں سمجھ نہیں آتی کہ کیا کرے؟ اکثر اس کے آس پاس ایسی معمولی اشیاءہوتی ہیں جن سے مشکل سے نجات پائی جاسکتی ہے اور ان کے استعمال سے زندگی بھی بچائی جاسکتی ہے۔

جرابیں: اگر آپ کے پیروں میں زخم یا انفیکشن ہوگیا ہے اور آپ طبی امداد سے محروم ہیں تو جرابیں آپ کے پیروں کو درجہ حرارت گرنے پر گرم رکھیں گی۔ اونی جرابیں اس حوالے سے بہترین ہیں جو آپ کی جلد کو نمی سے بچا کر زخم بگڑنے نہیں دیتی تاہم ہر قسم کی جراب کو اس مقصد کیلئے استعمال کیا جاسکتا ہے۔ ضرورت پڑنے پر آپ انہیں اپنے ہاتھوں پر چڑھا کر تپش اور کانٹوں سے بھی تحفظ حاصل کرسکتے ہیں اور اگر کوئی خطرہ سامنے آجائے تو اس میں پتھر بھر کر انہیں ہتھیار کے طور پر بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔

وہ انوکھا قبیلہ جہاں شوہر کی موت پر بیگم کے اعضاء کاٹ دیے جاتے ہیں،جاننے کیلئے کلک کریں

چیونگم: سادہ چیونگم بہت کام کی چیز ہوتی ہے۔ اس گم کے ایک ٹکڑے کو چبانے سے آپ اپنی بھوک پر قابو پاسکتے ہیں۔ خاص طور پر ان حالات میں جب آپ کے پاس کھانے کے لئے بہت کم سامان ہو یا ہنگامی حالات میں گھرے ہوئے ہوں۔ چیونگم چبانے سے منہ میں لعاب دہن بنتا ہے جوبہت ضروری ہوتا ہے۔ اگرچہ یہ کسی باقاعدہ کھانے کامتبادل تو نہیں مگر چیونگم کے ایک یا دو ٹکڑے مختصر مدت کے لئے جسم کو غذائیت بخشنے کا کام ضرور کرسکتے ہیں۔

سپر گلو: کیا آپ کے جسم پر کوئی ایسا زخم آگیا ہے جسے سلائی کی ضرورت ہے؟ آپ کے ارد گرد طبی امداد، سوئی دھاگہ م یسر نہیں یا ٹانکوں کی تربیت حاصل نہیں؟ اگر ہاں تو کوئی مسئلہ نہیں اس پر گلو ایسا ایمرجنسی مرہم ثابت ہوتا ہے جو جسم پر لگنے والے معمولی کٹ کو فوری طور پر بند کردیتا ہے اور انہیں انفیکشن سے بچاتا ہے تاہم یہ گولیوں کے نتیجے میں ہونے والے سوراخ کے حوالے سے زیادہ فائدہ مند ثابت نہیں ہوتا۔

بارودی مادہ: آپ نے فلموں میں دیکھا ہی ہوگا کہ ایک شخص گولی گلنے سے زخمی ہوتا ہے تو وہ کچھ گولیوں سے بارود یا گن پاﺅڈر نکال کر جمع کرتا ہے اور زخم پر چھڑک کر آگ لگا دیتا ہے؟ اگر ہاں تو یہ واقعی بہت موثر طریقہ ہے اگرچہ اس سے تکلیف بہت زیادہ ہوتی ہے مگر یہ گہرے زخموں کو جراثیم سے پاک کرنے اور بند کرنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔ یہ کوئی بہترین حل تونہیں مگر کسی ہنگامی صورتحال یا ڈاکٹر تک رسائی نہ ہونے کی صورت میں ایک اچھا آپشن ضرور ہے۔

پینے کا سوڈا: منہ میں پانی بھردینے والی کولڈ ڈرنک مشکل حالات میں ایک ہتھیار کے طور پر بھی استعمال کی جاسکتی ہے۔ بس بوتل کو زور زور سے ہلائیں اور پھر اسے حملہ آور کی آنکھوں پر چھڑک دیں یا کسی سنسان جگہ پر پھنس جانے کی صورت میں خالی کین کے نچلے حصے کو روشنی کی مدد سے سگنل بھیجنے کے لئے بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔ اگر مدد نہیں مل رہی اور کھانے کامسئلہ ہے تو اسے مچھلی پکڑنے والے کانٹے کی شکل دے کر بھی اس مسئلے کا حل نکالا جاسکتا ہے۔

ہاتھ دھونا: عام طور پرلوگ ہاتھ دھونے والے مائع کا استعمال جراثئم دور بھگانے کے لئے کرتے ہیں مگر کسی جنگل میں راہ بھٹک جانے پر یہ آگ لگانے کیلئے بہترین ایندھن کا کام کرتا ہے۔ ہوسکتا ہے کہ آپ کو معلوم نہ ہو مگر بیشتر ہاتھ دھونے کے جیل الکحل سے تیار ہوتے ہیں جو آسانی سے آگ پکڑ لیتے ہیں بس آپ کو لکڑی کے چھوٹے ٹکڑوں کا ڈھیر جمع کرنا ہوگا اور پھر اس سیال مادے کو چھڑک کر آگ لگادیں۔ تاہم اس بات کا خیال رکھیں کہ اپنے ہاتھوں کو مٹی سے رگڑ کر صاف کرلیں ورنہ ان کے جلنے کا بھی خطرہ ہوگا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس