وہ منفرد بیمار ی جو صرف دنیا کے چار خاندانوں کو ہے

وہ منفرد بیمار ی جو صرف دنیا کے چار خاندانوں کو ہے
وہ منفرد بیمار ی جو صرف دنیا کے چار خاندانوں کو ہے

  



جنیوا (نیوز ڈیسک) ہر انسان کی انگلیوں کی لکیریں یعنی فنگر پرنٹ دوسرے انسانوں سے مختلف ہوتے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ انہیں شناخت کا بہترین ذریعہ سمجھا جاتا ہے لیکن امریکی بارڈر سیکیورٹی کو اس وقت چکر آ گئے جب ایک خاتون کی انگلیاں فنگر پرنٹ سے پاک نکلیں۔

میکڈونلڈ کے چپس میں کیا نکلا؟جان کر آپ حیران ہوں گے اور پریشان بھی،جاننے کیلئے کلک کریں

یہ خاتون سوئٹزر لینڈ کی شہری تھیں اور امریکہ میں داخل ہونا چاہ رہی تھیں لیکن جب سیکیورٹی اہلکاروں نے قوانین کے مطابق ان کے فنگر پرنٹ لینے کی کوشش کی تو مشین نے معذرت کر لی۔ خاتون نے ان اہلکاروں کو بتایا کہ اس کی انگلیوں پر لکیریں ہیں ہی نہیں لیکن ان اہلکاروں نے یقین نہ کیا مگر بار بار کوششوں سے فنگر پرنٹ حاصل نہ ہونے پر انہوں نے خاتون کو سرحد پار کرنے کی اجازت دینے سے انکار کر دیا۔

اس خاتون نے مشہور ماہرجلد ڈاکٹر پیٹر ایٹن سے رابطہ کر کے اپنی دکھ بھری داستان سنائی۔ ڈاکٹر ایٹن کہتے ہیں کہ یہ بات ان کیلئے بھی حیران کن تھی۔ جب انہوں نے تحقیق کی تو معلوم ہوا کہ خاتون کے خاندان کے مزید افراد میں بھی یہی مسئلہ موجود تھا۔ انہوں نے ایک اسرائیلی ماہر جلد کے ساتھ مل کر وسیع تحقیق کا آغاز کیا تو تین مزید خاندان مل گئے کہ جن کی انگلیاں فنگر پرنٹ سے محروم تھیں۔ جب ان کے ڈی این اے ٹیسٹ کئے گئے تو معلوم ہوا کہ یہ تینوں خاندان مشترک آباﺅ اجداد رکھتے تھے اور یوں دور کے رشتہ دار ہی تھے ۔

اب تک کی تحقیق کے مطابق Adermatoglyphia نامی یہ مسئلہ صرف انہی چار خاندانوں میں پایا جاتا ہے اور ان میں یہ مسئلہ آباؤ اجداد سے چلا آرہاہےجس کی وجہ سے انہیں دنیا میں ایک منفرد مقام حاصل ہو گیا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ کیفیت ایک مخصوص قسم کی پروٹین کی وجہ سے جینز میں گڑبڑ پیدا ہونے پر سامنے آتی ہے لیکن اس کا جسم پر کوئی دیگر منفی اثر نہیں دیکھا گیا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...