بیشتر لوگوں کو موت سے بھی زیادہ کس چیز سے ڈر لگتاہے؟تحقیق میں حیرت انگیز انکشاف

بیشتر لوگوں کو موت سے بھی زیادہ کس چیز سے ڈر لگتاہے؟تحقیق میں حیرت انگیز ...
بیشتر لوگوں کو موت سے بھی زیادہ کس چیز سے ڈر لگتاہے؟تحقیق میں حیرت انگیز انکشاف

  

برمنگھم (نیوز ڈیسک) ہماری روزمرہ زندگی میں بہت سے کام ایسے ہوتے ہیں کہ جنہیں کرنے یا جن کا سامنا کرنے سے ہم گھبراتے ہیں اور ایک کام ایسا بھی ہے کہ جو بظاہر تو آسان لگتا ہے لیکن اسے کرتے ہوئے بڑے بڑوں کی ٹانگیں کانپنے لگتی ہیں۔ کاروباری مشاورت فراہم کرنے والے بین الاقوامی ادارے TED TALKS نے ایک تحقیق کے حوالے سے انکشاف کیا ہے کہ تقریر کرنا یا کسی مجمعے کے سامنے بولنا ایک ایسا کام ہے کہ جسے تقریباً 75 فیصد لوگ موت کا سامنا کرنے سے بھی مشکل محسوس کرتے ہیں۔

وہ انوکھا قبیلہ جہاں شوہر کی موت پر بیگم کے اعضاء کاٹ دیے جاتے ہیں ،جاننے کے لئے کلک کریں

 ان لوگوں کا کہنا ہے کہ بڑے مجمعے کے سامنے بولتے وقت ان کے پسینے چھوٹ جاتے ہیں، ہاتھ پاﺅں کانپنے لگتے ہیں اور زبان لڑکھڑانے لگتی ہے۔ ہم سب کو سکول کے دور سے ہی ان کیفیات کا تجربہ ہوتا ہے۔ جب استاد ایک بچے کو کھڑا کرکے پوری کلاس کے سامنے کچھ بیان کرنے کو کہتا ہے تو بچے پر شدید گھبراہٹ طاری ہوجاتی ہے اور اکثر بچے تو دوسروں کے سامنے بولنے سے اتنے گھبراتے ہیں کہ بات سمجھ نہ آنے پر بھی کبھی سوال نہیں کرتے۔

 اس کے برعکس 10 فیصد لوگ ایسے ہوتے ہیں کہ جو سوال پوچھنا اور عوامی اجتماعات میں بولنا یا تقریر کرنا بہت پسند کرتے ہیں اور انہیں اس صلاحیت کا زندگی میں بے پناہ فائدہ ہوتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ اس صلاحیت کو ہر کوئی حاصل کرسکتا ہے اور اس کے لئے سب سے پہلے تو یہ سمجھنا ضروری ہے کہ آپ کو اپنے اوپر مکمل اعتماد ہونا چاہیے۔ آپ اگر زیادہ اچھا نہیں بھی بول پاتے تو یہ کوئی گناہ یا جرم نہیں، آپ کو ہر حال میں اپنی بات کرنی چاہیے۔

کامیاب مقرر بننے کیلئے ضروری ہے کہ آپ شاندار تقریر کرنے والوں کا بغورمشاہدہ کریں، جب لوگوں سے مخاطب ہوں تو بے مقصد بات نہ کریں اور سامعین سے کبھی بھی نظریں نہ چرائیں بلکہ ایسے بات کریں گویا کہ آپ دوستوں کے ساتھ محو گفتگو ہوں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس