بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کونقصانات کم کرنے کیلئے ہدایات جاری

بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کونقصانات کم کرنے کیلئے ہدایات جاری

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(پ ر) پاکستان الیکٹرک پاور کمپنی (پیپکو) نے بجلی کی تقسیم کار کمپنیز کے سربراہان کو بجلی کے ترسیلی نظام کے لاسز (AT&C) Aggregate Technical & Commercial Lossesکو کم کرنے کیلئے مؤثر حکمت عملی بنانے کی ہدایات جاری کر دیں۔ یہ ہدایات پیپکو مینجمنٹ نے ملک کی 10 تقسیم کار کمپنیز کو پچھلے 5 ماہ کے دوران 11kV فیڈرز پر مقررہ حد سے زیادہ لاسز کی مد میں بجلی کے ضیاع کے پیش نظر جاری کیں۔ صرف نومبر 2017ء کے مہینے میں 745 فیڈرز پر 50 فیصد سے زیادہ لاسز ریکارڈ کئے گئے جن کی مد میں 250.71 ملین یونٹس بجلی ضائع ہوئی۔ اسی طرح جولائی تا نومبر میں 1241 فیڈرز سوائے اسلام آباد الیکٹرک سپلائی کمپنی (آئیسکو) کے 2233.67 ملین یونٹس بجلی ضائع ہوئی۔نومبر 2017ء کی پراگریس رپورٹ کے مطابق بدترین کارکردگی کی حامل ڈسٹری بیوشن کمپنی پشاور الیکٹرک سپلائی کمپنی نے 141.85 ملین یونٹس، لیسکو نے 16.64 ملین یونٹ بجلی ضائع کی۔

س، سکھر الیکٹرک سپلائی کمپنی (سیپکو) نے 20.01 ملین یونٹس، کوئٹہ الیکٹرک سپلائی کمپنی (کیسکو) نے 37.37 ملین یونٹس بجلی ضائع کی۔ پیپکو مینجمنٹ نے کہا ہے کہ مذکورہ نقصانات ناصرف پاور سیکٹر کی مالی حالت کو کمزور کر رہے ہیں بلکہ یہ ڈسٹری بیوشن کمپنیز کی بُری کارکردگی کی بھی نشاندہی کرتے ہیں۔ منیجنگ ڈائریکٹر پیپکو مصدق احمد خان نے ڈسکوز کے سربراہان کو ہدایات جاری کیں کہ مذکورہ فیڈرز پر بلنگ اینڈ کولیکشن کو آؤٹ سورس کرنے کے علاوہ بھی مؤثر حکمت عملی بنا کر متعلقہ بورڈ آف ڈائریکٹرز کو اس کی منظوری اور نفاذ کیلئے پیش کیا جائے۔منیجنگ ڈائریکٹر پیپکو نے کہا کہ بجلی کی تقسیم کار کمپنیز کی کارکردگی ماہانہ وار اجلاسوں میں مانیٹر کی جائے گی۔ کارکردگی بہتر نہ ہونے کی صورت میں قابل اطلاق قوانین ایفیشینسی اینڈ ڈسپلن (E&D) رولز 1978ء، الیکٹریسٹی ایکٹ اور نیب آرڈیننس کے تحت کارروائی عمل میں لائی جاسکتی ہے۔

مزید :

کامرس -