سمگلنگ معیشت کے لیے بڑا خطرہ بن چکی ہے، سخت ایکشن کی ضرورت ہے: ملک طاہر جاوید

سمگلنگ معیشت کے لیے بڑا خطرہ بن چکی ہے، سخت ایکشن کی ضرورت ہے: ملک طاہر جاوید

لاہور (کامر س ڈیسک) لاہور چیمبر کے صدر ملک طاہر جاوید نے سمگلنگ کے خلاف انتہائی سخت ایکشن پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ مسئلہ فورا حل کرنا ضروری ہے کیونکہ اس کی وجہ سے مقامی صنعتوں ور قومی خزانے دونوں کو بھاری نقصان پہنچ رہا ہے۔ ایک بیان میں ملک طاہر جاوید نے کہا کہ سمگلنگ معیشت کے لیے بڑا خطرہ بن چکی ہے اور کوئی شعبہ بھی ایسا نہیں جو اس کے مضر اثرات سے محفوظ ہو۔ انہوں نے کہا کہ سمگلنگ ہماری معاشی نشوونما کے لیے بہت بڑا خطرہ بن چکی ہے، افغانستان، ایران، چین اور بھارت سے سمگل شدہ اشیاء ایک سیلاب کی طرح آرہی ہیں۔

، چونکہ ان پر کوئی ڈیوٹی یا ٹیکس ادا نہیں کیا جاتا لہذا سستی ہونے کی وجہ سے صارفین انہیں مقامی اشیاء پر ترجیح دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک بھر کی مارکیٹیں سمگل شدہ اشیاء سے بھری پڑی ہیں جس کی وجہ سے مقامی صنعتیں اپنی بقاء کی جنگ لڑ رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کا بھی بہت غلط استعمال ہورہا ہے اور اس معاہدے کے تحت آنے والی اشیاء کا ایک بڑا حصہ غیر قانونی طور پاکستان میں ہی کھپا دیا جاتا ہے، اگر حکومت نے سمگلنگ کی روک تھام کے لیے فوری اور سخت اقدامات نہ اٹھائے تو صورتحال مزید خراب ہوجائے گی۔ انہوں نے کہا کہ ڈیوٹیوں اور ٹیکسوں کی زیادہ شرح سمگلنگ کی حوصلہ افزائی کا باعث بن رہی ہے لہذا حکومت اْن اشیاء پر ڈیوٹیاں اور ٹیکس کم کرے جو سمگلنگ کے لیے کشش رکھتی ہیں۔ لاہور چیمبر کے صدر نے کہا کہ سمگلروں کے ساتھ آہنی ہاتھوں سے نمٹنا اور انہیں سخت سزا دینا بہت ضروری ہے کیونکہ یہ اپنے ذاتی فائدے کے لیے قومی مفادات کو داؤ پر لگارہے ہیں۔

مزید : کامرس