بھارت ،مساجد، مندروں ، چرچ میں بغیر اجازت لگے لاؤڈ سپیکرہٹانے کا حکم

بھارت ،مساجد، مندروں ، چرچ میں بغیر اجازت لگے لاؤڈ سپیکرہٹانے کا حکم

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

نئی دہلی ( نمائندہ خصوصی )بھارتی ریاست اتر پردیش کی حکومت نے مساجد، مندروں اور گرجا گھروں پر بغیر اجازت لگائے گئے لاؤڈ سپیکر اور پبلک ایڈریس سسٹم ہٹانے کا حکم دے دیا ہے۔انڈین ایکسپریس کے مطابق ریاستی حکومت نے لاؤڈ سپیکرز لگانے کے لیے اجازت نامے کے حصول کے لیے 15 جنوری تک کی ڈیڈ لائن دی ہے، 20 جنوری کے بعد انہیں ہٹا دیا جائے گا۔یہ پیش رفت ایسے وقت ہوئی ہے جب 20 دسمبر کو الہ آبادہائی کورٹ کے لکھنؤ بینچ نے ریاستی حکومت سے استفسار کیا تھا کہ آیا مساجد، مندروں اور گرجا گھروں میں لاؤڈ سپیکراور پبلک ایڈریس سسٹم انسٹال کرنے کے لیے اجازت طلب کی گئی تھی یا نہیں۔ 10 صفحات پر مشتمل آرڈر میں عدالت نے ریاستی حکومت کو حکم دیا تھا کہ ایسے تمام مذہبی یا عوامی مقامات کی نشاندہی کی جائے جہاں بغیر اجازت لاؤڈ سپیکرز لگائے گئے ہیں۔ عدالتی حکم میں مذہبی اور عوامی مقامات کے منتظمین کو یہ ہدایت بھی کی گئی تھی کہ وہ لاؤڈسپیکر یا کسی بھی پبلک ایڈرس سسٹم کو لگانے کے لیے 15 جنوری تک اجازت نامہ حاصل کریں، دوسری صورت میں انہیں صوتی آلودگی (ریگولیشن اینڈ کنٹرول) رولز 2000 کے تحت کارروائی کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔ا
لاؤڈ سپیکر

مزید :

صفحہ آخر -