پی کے 79 جماعت اسلامی کا گڑھ ہے ،گل محمد خان

پی کے 79 جماعت اسلامی کا گڑھ ہے ،گل محمد خان

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


بونیر ) ڈسٹرکٹ رپورٹر(جماعت اسلامی کے ضلعی رہنماء اور یو نین کونسل اباخیل کے ڈسٹرکٹ ممبر گل محمد خان عرف طوطا نے کہاہے کہ جوڑ گراونڈ میں ہزاروں کی تعداد میں جماعت اسلامی کے کارکنوں نے ثابت کردیاہے کہ حلقہ پی کے 79 پہلے بھی جماعت اسلامی کا گڑھ تھا اور مستقبل میں کوئی سیاسی جماعت اس حلقہ میں ہمارا مقابلہ نہیں کرسکتا ۔صوبائی امیر مشتاق احمد حان کے کامیاب دورہ بونیر اور جے یو ئی کے اہم رہنماء پیرباچا زادہ ہاشمی کی جماعت اسلامی میں شمولیت سے ثابت ہوگیا کہ انے والے وقتوں میں بہت سے اہم سیاسی شحصیات جماعت اسلامی میں شامل ہو ں گے ۔کامیاب جلسہ کے انعقاد پر حلقہ 79 اور خصوصا یونین کونسل ملی خیل اور اباخیل کے کارکن مبارکباد کے مستحق ہیں ۔ڈگر میں ایک ملاقات کے دوران ڈسٹرکٹ ممبر نے کہا کہ 2018 کا الیکشن قریب اتے ہی بہت سے سیاسی شحصیات اور علماء کرام اپنے اپنے جماعتوں سے مستعفی ہوکر جماعت اسلامی میں شامل ہوں گے ۔جس سے پورے بونیر اور خصوصا حلقہ پی کے 79 کاسیاسی نقشہ بدل جائے گا ۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی اور بونیر لازم ملزوم ہیں ۔جماعت اسلامی کے تمام ممبران اسمبلی اور خصوصا سابق سپیکر بحت جہان خان نے اس حلقہ کے لئے جتنے ترقیاتی منصوبے کئے ہیں ۔تمام گذشتہ اور موجودہ ممبران مل کربھی نہیں کرسکتے ۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی کے جنرل کونسلر سے لیکر سینٹر تک کسی بھی منتحب ممبر پر کرپشن کا الزام تک نہیں ہے ۔جبکہ دیگر ممبرانوں نے اپنے اپنے دور میں جو کچھ کمایا ہے وہ کسی سے پوشیدہ نہیں ہے ۔انہوں نے نئے شامل ہونے والے جے یو ائی کے رہنماء پیر باچا ذادہ ہاشمی کی شمولیت کو جماعت اسلامی کے لئے انتہائی اہمیت کا حامل قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ پیرباچا ذادہ ہاشمی ایک وسیع حلقہ اثر رکھنے والے عالم ہیں اور ہزاروں کی تعداد میں انکے مرید ہیں ۔انشاء اللہ بہت جلد پورے بونیر میں اسکی وساطت سے اہم شحصیات جماعت اسلامی میں شامل ہو ں گے ۔انہوں نے کہاکہ 2018 کے الیکشن میں جماعت اسلامی تین صوبائی اور ایک قومی حلقہ پر واضح کامیابی حاصل کرے گی ۔