پاکستان کے کیساتھ آزادکشمیر میں بھی الیکشن کرائے جائیں،خالد ابراہیم

پاکستان کے کیساتھ آزادکشمیر میں بھی الیکشن کرائے جائیں،خالد ابراہیم

مظفرآباد (بیورورپورٹ ) جموں و کشمیر پیپلزپارٹی کے صدر سردار خالد ابراہیم خان رکن قانون ساز اسمبلی نے کہا ہے کہ آزاد کشمیر کے وزیر اعظم اسمبلی تحلیل کر کے پاکستان کے نگران سیٹ اپ کے دور میں پاکستان کے عام انتخابات کے ساتھ آزاد کشمیر کے انتخابات کرادیں، 15 برسوں میں کلچر بدل گیا ہے۔ عوام نے پرویز مشرف، آصف زرداری اور نواز شریف کو ووٹ دیے، ووٹ پاکستان اور آزاد کشمیر کی سیاسی جماعتوں کو ملنے چاہیے حکومت کو نہیں، آزاد کشمیر میں سیاسی نظریاتی حکومت نہیں مسلم کانفرنس کے کارکن ہیں جو مختلف حکومتوں میں رہے ہیں ۔ آج بھی سرکاری پیسہ کارکنوں میں تقسیم کیا جا رہا ہے ۔ بلدیاتی انتخابات سے راہ فرار اختیار کی گئی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مظفرآباد پریس کلب میں سینئر صحافیوں سے بات چیت کر تے ہوئے کیا۔ سردار خالد ابراہیم خان نے کہا کہ حکومت کی کارکردگی کے دو پہلو میں ایک یہ کہ کابینہ کا سائز کم رکھا گیا ہے دوسرا این ٹی ایس کے ذریعہ محکمہ تعلیم میں تقرریاں کی گئی ہیں باقی اصلاح و احوال کی ضرورت ہے ۔ مختلف سوالات کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ریاست جموں کشمیر میں حق خودارادیت تمام مذاہب کیلئے ہے ہم اقلیت کو حصہ نہیں سمجھتے یہ پالیسی درست نہیں ہے ہماری تحریک مذہبی نہیں انسانی حقوق کی تحریک ہے۔ معاہدہ کراچی اور 24 اکتوبر 1947 کے ڈیکلریشن میں ہمارے رول کا تعین ہے ہمارے لوگ 24 اکتوبر کے ڈیکلریشن کو پڑتے نہیں ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ آزاد کشمیر کی حکومت کی ترجیحات میں تحریک آزادی کشمیر نہیں ہے کچھ اور چیزیں سامنے آگئی ہیں ڈیڑھ سالہ ترجیحات کی بنیاد پر لوگ حکومت پر اعتماد نہیں کر تے۔ اختلاف رائے کر نے والوں کو وزیر اعظم ساتھ لے کر نہیں چلتے ہیں انہوں نے کہا کہ غازی ملت سردار محمد ابراہیم خان مجاہد اول سردار محمد عبد القیوم خان اور کے ایچ خورشید نے ادارے بنائے ان کا کردار اور جدو جہد رول ماڈل کی حیثیت رکھتے ہیں ۔ جب کہ حکومت کا کام قائم شدہ اداروں کو فعال بنانا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب اپوزیشن بھی حکومت بنائے تو وہ کردار کیسے ادا کرے گی۔ حکومت اپوزیشن کے اصل رول کو تسلیم کرے۔ انہوں نے کہا کہ صدارتی انتخابات برائے دوست ہونے چاہیے۔ جس پر عوام اپنا نمائندہ لائیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اسلام کے نام پر نہیں مسلمان کے نام پر قائم ہوا ہے۔ انہوں نے آزاد کشمیر حکومت کے 1970 کے اختیارات بحال کیے جائیں۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر