اعلیٰ تعلیمی شعبے میں انقلابی تبدیلیا ں ہوئی ہیں ، ڈاکٹر اریلڈ تجیلدوول

اعلیٰ تعلیمی شعبے میں انقلابی تبدیلیا ں ہوئی ہیں ، ڈاکٹر اریلڈ تجیلدوول

کراچی (اسٹاف رپورٹر)دنیا میں اعلیٰ تعلیمی شعبے میں گزشتہ دہائیوں میں انقلابی تبدیلیا ں برآمد ہوئی ہیں ، تعلیم کے ذریعے ہی ترقی کا سفر ممکن ہوسکا ہے۔ تعلیمی سرگرمیوں کے علاوہ جامعات میں قیادت کا بھی کلیدی کردار ہے جس سے انکار ممکن نہیں ۔ بین الاقوامی منظرنامے پر طاقت کے مرکز میں تبدیلی واقع ہو رہی ہے، جسکے نتیجے میں چین ، جاپان اور سنگاپور جیسے ممالک معاشی طاقت بن کر ابھر رہے ہیں ۔ ان خیالات کے اظہار یونیورسٹی آف اوسلو،ناروے کے پروفیسر ڈاکٹر اریلڈ تجیلدوول نے اقراء یونیورسٹی کے زیر اہتمام بزنس مینجمنٹ، تعلیم اور سوشل سائنسزپردو روزہ بین الاقوامی کانفرنس کی افتتاحی تقریب سے کلیدی خطاب کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے وائس چانسلر ڈاکٹر وسیم قاضی کو انتہائی اہم موضوع پر کانفرنس کے انعقاد پر مبارک باد دی ۔ اس موقع پر ڈاکٹر وسیم قاضی ،انجینئر جاوید میمن،پروفیسر ڈاکٹر روؤفِ اعظم، پروفیسر ڈاکٹر ریاض الحق طارق،ڈاکٹر عرفان حمید ، ڈاکٹر شہریار ملک ، امتیاز عارف اور دیگر بھی موجود تھے۔ اقرا ء یونیورسٹی کے وائس چانسلرو صدر پروفیسر ڈاکٹر وسیم قاضی نے خطبہِ استقبالیہ پیش کرتے ہوئے کہاکہ اقرا ء یونیورسٹی کی جانب سے گزشتہ آٹھ ماہ کے قلیل عرصے میں پانچ بین الاقوامی کانفرنسوں کا انعقاد کیا جا چکا ہے جو ہماری تعلیمی اور تحقیقی سر گرمیوں کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ پبلک پرائیوٹ پارٹنرشپ کے تحت اقرا ء یونیورسٹی نے پہلے مرحلے میں سندھ کی سرکاری جامعات سے اشتراک کیا اور اب دوسرے مرحلے میں پنجاب کی سرکاری جامعات کے اشتراک سے کانفرنس کا انعقاد کیا جا رہا ہے ۔ میں تمام ملکی اور غیر ملکی اسکالرز کو اقرا ء یونیورسٹی میں خوش آمدید کہتا ہوں ۔ ہائر ایجوکیشن کمیشن کے ریجنل ڈائریکٹر جاوید میمن نے اپنے خطاب میں اقرا ء یونیورسٹی کی تعلیمی و تحقیقی سرگرمیوں کو سر اہتے ہوئے کہاکہ اقرا ء یونیورسٹی کی جانب سے کمیونٹی کالجز کے قیام اور اوریک کے لئے۰۲ ملین روپے فنڈ کی منظوری کے فیصلے انتہائی لائقِ تحسین ہیں۔ گزشتہ پندرہ سالوں سے ابتک جامعات کی تعداد۸۸۱تک جا پہنچی ہیں جبکہ ایچ ای سی ملک کے ہر ضِلعے میں جامعات کے کیمپس قائم کرنے میں کوشاں ہے ۔ وائس چانسلر یونیورسٹی آف ایجوکیشن ، لاہور پروفیسر ڈاکٹر روؤفِ اعظم نے کہا کہ موجودہ تعلیمی نظام صدیوں پرانا ہے ، ضرورت اس امر کی ہے کہ تعلیمی اور بزنس ماہرین ملکرجدید عصری تقاضوں سے ہم آہنگ ایک جدید تعلیمی نظام مرتب کریں۔ چیئر مین نیشنل ایکریڈٹیشن کونسل فار ٹیچر ایجوکیشن پروفیسر ڈاکٹر ریاض الحق طارق نے کہا کہ جامعات مستقبل کا تعین کرتی ہیں اور اساتذہ کامعیار اور کمٹمنٹ ہی جامعات کے معیار کے تعین کرتی ہیں ۔ واضح رہے کہ کانفرنس آج بھی جا ری رہے گی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر