محکمہ سوئی گیس ‘ گیس دینے کے بجائے الٹا میٹر اتروانے لگا

 محکمہ سوئی گیس ‘ گیس دینے کے بجائے الٹا میٹر اتروانے لگا

  

ملتان ( سٹاف رپورٹر ) ’’مرے کو مارے شاہ مدار‘‘ کے مصداق سوئی گیس حکام صارفین کو گیس فراہم کرنے کی بجائے ان کے میٹر اتروانے لگے ۔سوئی گیس اہلکارمیٹر واپس لگانے کے لئے پیسے بٹورنے میں لگ گئے۔ متاثرہ صارفین آہیں بھرنے اور بد دعائیں دینے لگے ۔چیف جسٹس آف(بقیہ نمبر39صفحہ12پر )

پاکستان سے از خود نوٹس لینے کی فریاد کر دی ۔تفصیل کے مطابق سوئی ناردرن گیس پائپ لائنز لمیٹڈ ( ایس این جی پی ایل) انتظامیہ صارفین کو ریلیف دینے میں مکمل طور پر ناکام ہو گئی ہے ۔ صارفین کو ٹھیک طریقے سے سوئی گیس فراہم نہیں کی جا رہی ہے۔ بیشتر علاقوں میں گیس برائے نام ہوتی ہے ۔ پریشر نہ ہونے کے برابر ہو تا ہے جبکہ بل مکمل طور پر وصول کئے جا رہے ہیں ۔ سوئی گیس حکام کی نا اہلی کے باعث ان علاقوں کے مکین انتہائی مجبور ہو کر گیس کمپریسر استعمال کرنے پر مجبور ہو چکے ہیں ۔ اس پر سوئی گیس انتظامیہ مذکورہ صارفین کو بہتر طور پر گیس کی فراہمی کا فریضہ سر انجام دینے کی بجائے الٹا ان صارفین کو ہراساں اور پریشان کر رہی ہے ۔ سوئی گیس انتظامیہ فورس کے ارکان کمپریسر استعمال کرنے والے صارفین کے میٹر اتار رہے ہیں ۔ بااثر صارفین کو کچھ نہیں کہا جاتا جبکہ سفارش سے محروم کمزور صارفین کے میٹر فوری اتار لئے جاتے ہیں ۔ رشوت دینے والوں کے میٹر فوری طور پر واپس لگا دئیے جاتے ہیں اور رشوت دینے سے انکار کرنے والوں کے میٹر دفتر پہنچا دئیے جاتے ہیں ۔ موقع پر میٹر چھوڑنے کا ریٹ کم ہوتا ہے جو میٹر کے دفتر پہنچے کے بعد بڑھ جاتا ہے ۔صارفین سے ایک ہزار روپے سے 5ہزار روپے تک رشوت لی جا رہی ہے ۔ میٹر اترنے کے بعد جو صارف فوری یا اگلے روز صبح ہی دفتر پہنچ جائے تو رشوت لے کر اس کا میٹر واپس لگا دیا جاتا ہے وگرنہ دفتر میں جمع کرلیا جاتا ہے جو 15 روز سے ایک ماہ تک واپس کیا جاتا ہے ۔ میٹر واپس لگانے کے عوض بھی سوئی گیس اہلکار5ہزار روپے تک رشوت وصول کرتے ہیں ۔ بصورت دیگر متاثرہ صارفین کو دفتر کے چکر پر چکر لگواتے ہیں ۔صارفین نے ایم ڈی سوئی گیس اور وزارت قدرتی وسائل کے حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ سوئی گیس ناردرن ملتان ریجن کے حکام کی چیرہ دستیوں کا نوٹس لیا جائے اور معاملات ٹھیک کرکے عذاب سے نجات دلائی جائے ۔سوئی گیس کے پورے بل وصول کئے جانے کے بعد حکام کی ذمہ داری ہے کہ وہ پریشر کے ساتھ گیس فراہم کریں ۔ چیف جسٹس آف پاکستان سے استدعا ہے کہ وہ از خود نوٹس لے کر سخت ایکشن لیں اور صارفین کی دادرسی کرائیں اور انصاف دلائیں۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -