انڈوں کا معیار بہتر کرنے کیلئے 3ماہ کی ڈیڈ لائن

انڈوں کا معیار بہتر کرنے کیلئے 3ماہ کی ڈیڈ لائن

  

ملتان،ڈیرہ غازی خان(وقائع نگار،سٹی رپورٹر ،نمائندہ خصوصی)پنجاب کے شہریوں کو حفظان صحت کے اصولوں کے مطابق اشیائے خوردونوش فراہم کرنے کیلئے فوڈ اتھارٹی کی کارروائیاں جاری ہیں۔انڈوں کا کاروبار کرنے والوں کو بھی نوٹس مل گئے ملتان سے وقائع نگار کے مطابق پنجاب فوڈ اتھارٹی کی کارروائیاں جاری، خراب انڈوں کے کاروبار کی بڑھتی ہوئے شکایات کے پیش نظر انڈوں کا کاروبار (بقیہ نمبر40صفحہ12پر )

کرنیوالوں کو معیار بہتر کرنے کے لئے تین ماہ کی ڈیڈلائن دے دی تفصیلات کے مطابق ڈائریکٹر جنرل پنجاب فوڈ اتھارٹی نورالامین مینگل کے دفتر سے جاری ہونے والی وارننگ کے مطابق پنجاب فوڈ اتھارٹی نے پیور فوڈ ریگولیشنز2017کے مطابق انڈوں کو ایسی جگہ پر محفوظ کرنے کی ہدایات جاری کی ہیں جہاں درجہ حرارت25 ڈگری سینٹی گریڈ سے کم ہو۔علاوہ ازیں انڈوں کے اوپر تاریخ تنسیخ بھی واضح طور پرلکھی جائے۔انڈوں کے ٹرے صاف ،خشک جگہ پر رکھنے اور تیز روشنی سے بچانے کی ہدایات بھی جاری کی گئی ہیں۔وارننگ میں مزید کہا گیا ہے کہ انڈوں کا چھلکا صاف اور ٹوٹا ہوا نہ ہو۔پنجاب فوڈ اتھارٹی کی جانب سے رعائتی مدت برائے اصلاح معیار3 مہینے مقرر کی ہے جو 30مارچ2018 کو ختمہو جائے گی ۔دریں اثناء ساؤتھ ریجن 1-کے مختلف شہروں میں کاروائیاں کرتے ہوئے فوڈ سیفٹی ٹیمز نے3فوڈ پوائنٹس کو غیر معیاری خوراک مہیا کرنے پر سربمہراورمختلف فوڈ پوائنٹس کو ناقص صفائی کے انتظامات پر210000روپے جرمانہ ، ناقص غذا موقع پر تلف اور متعدد کو وارننگ نوٹسز جاری کیے۔تفصیلات کے مطا بق ڈائریکٹر آ پریشنز ساؤتھ I-کیپٹن سعید لغاری کی سربراہی میں خانیوال میں نیو تنویر پان شاپ،لودھراں میں شان بیکرز اور بہاولپور میں نیو کراچی پان شاپ کو دی گئی ہدایات پر عمل نہ کرنے ،حشرات کی روک تھام کے مناسب انتظامات نہ ہونے،مکڑیوں کے جالے لگے ہونے،ورکرز کی ذاتی صفائی ناقص ہونے،گندے اور بدبودار ماحول کی وجہ سے سیل کر دیا۔اس کے علاوہ مختلف فوڈ پوائنٹس کو حشرات کی روک تھام کے لیئے مناسب انتظامات نہ کرنے،کھلی نالیوں کی موجودگی ،صحت وصفائی کے ناقص انتظام ہونے اور پنجاب فوڈ اتھارٹی کے عائد کردہ اصولوں کی خلاف ورزی کرنے پر210000روپے جرمانے عائد کیے گئے جبکہ90لیٹرناقص شیرہ ،80لیٹر رینسڈ آئل اور 35کلو گرام دیگر زائدالمیعاد اشیاء برآمد کر کے تلف کی گئی۔اس موقع پرڈائریکٹر آپریشنز ساؤتھ I-کیپٹن سعید لغاری پنجاب فوڈ اتھارٹی کا کہنا تھاکہ سیل اور جرمانے کیے جانے والے فوڈ پوائنٹس کو ملاوٹ کرنے،ناقص خوراک فراہم کرنے اور حفظان صحت کے اصولوں کی خلاف ورزی پرکیے گئے۔انہوں نے مزید کہا کہ "ملاوٹ سے پاک پنجاب"پنجاب فو ڈ اتھارٹی کی اولین ترجیح ہے۔ڈیرہ غازی خان سے سٹی رپورٹر،نمائندہ خصوسی کے مطابق پنجاب فوڈ اتھارٹی کا جنوبی پنجاب میں ملاوٹ مافیا کے گرد گھیرا تنگ ترجمان فوڈ اتھارٹی ساؤتھ پنجاب کے مطابق گزشتہ روز کی کاروائیوں میں ناقص اشیاء خورو نوش فراہم کرنے پر 2 فوڈ پوائنٹ سیل اورسابقہ ہدایات پر عمل نہ کرنے پر مختلف فوڈ پوائنٹس کو 117000 روپے کے جرمانے تونسہ میں لطیف کریکرز کا پروڈکشن یونٹ ناقص پاپڑ بنانے پر سربمہر ،رحیم یار خان میں سزلنگ ہوٹل کو ناقص خوراک کی فراہمی پر سیل کیا گیا ،60کلو گرام ملاوٹ زدہ مصالحہ جات اور 149 لیٹر رینسڈ آئل اور 260 پیکٹ گٹکا موقع پر تلف کئے گئے ڈائریکٹر آپریشنز ساؤتھ دوم شہزاد مگسی نے کہا کہ *''ملاوٹ سے پاک پنجاب'' پنجاب فوڈ اتھارٹی کی اولین ترجیح ہے سیل اور جرمانے سوئیٹس بیکریز،ریسٹورینٹس اور گٹکاپوائنٹس کو کئے گئے سیل اور جرمانے کیے جانے والے فوڈ پوائنٹس حفظان صحت کے اصولوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے پائے گئے ان کے خلاف پنجاب فوڈ اتھارٹی کی ٹیموں نے فوری کاروائی کی جبکہ ٹیموں کی طرف سے مزید کاروائیوں کا سلسلہ بھی جاری ہے انہوں نے کہا کہ عوام ناقص اشیائے خوردونوش بنانے والوں کی نشاندہی میں تعاون کریں حکومت پنجاب کی ہدایت پر عوام کو حفظان صحت کے مطابق خوارکی اشیاء کی فراہمی کے لئے پنجاب فوڈ اتھارٹی پر عزم ہے گزشتہ روز بھی ناقص اشیاء خورو نوش فراہم کرنے پر 2 فوڈ پوائنٹ سیل اورسابقہ ہدایات پر عمل نہ کرنے پر مختلف فوڈ پوائنٹس کو 117000 روپے کے جرمانے تونسہ میں لطیف کریکرز کا پروڈکشن یونٹ ناقص پاپڑ بنانے پر سربمہر ،رحیم یار خان میں سزلنگ ہوٹل کو ناقص خوراک کی فراہمی پر سیل کیا گیا ،60کلو گرام ملاوٹ زدہ مصالحہ جات اور 149 لیٹر رینسڈ آئل اور 260 پیکٹ گٹکا موقع پر تلف کئے گئے۔

فوڈ اتھارٹی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -