تحریک عدم اعتماد لانا اپوزیشن کا حق ہے ،اختر مینگل

تحریک عدم اعتماد لانا اپوزیشن کا حق ہے ،اختر مینگل

کوئٹہ (این این آئی ) بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ سابق وزیراعلی رکن صوبائی اسمبلی سردار اختر جان مینگل نے کہاہے کہ بلوچستان حکومت نے پانچ سال تک اپوزیشن کو انتقامی کاروائی کا نشانہ بنایا ہے تحریک عدم اعتماد لانا اپوزیشن کا حق ہے لیکن جب حکومتی اراکین خود اپنی حکومت کیخلاف تحریک عدم اعتماد لائیں تو اس سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ ارکان اسمبلی کا کیا حال ہوسکتا ہے تحریک عدم اعتماد میں کونسا ایسا نقطہ ہو جو غیر آئینی یا غیر جمہوری ہواگر اسمبلیاں تحلیل کرنی ہوں تو دوسرے صوبوں یا مرکز سے بھی استعفیٰ دلواکر کی جاسکتی ہیں اس کا بلوچستان سے تعلق نہیں ۔یہ بات انہوں نے پیر کو نجی ٹی وی سے بات چیت کرتے ہوئے کہی ۔سردار اختر جان مینگل نے کہاکہ تحریک عدم اعتماد آئین کے آرٹیکل 136 اور بلوچستان اسمبلی کے قوائد انضباط کار 19(بی ) کے تحت لائی گئی ہے یہ تمام جمہوری طریقہ کار ہے تحریک میں زیادہ تر اراکین اپوزیشن جماعتوں کے ہیں (ن) لیگ نے تحریک شروع نہیں کی بلکہ حکومتی اتحادی جماعت ق لیگ کی جانب سے تحریک کا آغاز کیا گیا۔ انہوں نے کہاکہ سینیٹ کے الیکشن روکنے کے بہت سے طریقے ہیں قومی اسمبلی کے اپوزیشن اراکین اگر استعفیٰ دے دیں ،سندھ اور خیبر پختونخوا کی دو صوبائی اسمبلیاں میں بیٹھی ہوئی جماعتیں جو مرکز میں اپوزیشن کا کردار اداکررہے ہیں اگر وہ بھی اسمبلیاں تحلیل کریںیا مستعفی ہوجائے تب بھی آئینی بحران پیدا ہوسکتا ہے یہ ضروری نہیں کہ صرف بلوچستان سے ہی ایسا کیا جائے ۔انہوں نے کہاکہ جمہوریت صر ف حکومت یا پارلیمنٹ،الیکشن کا نام نہیں جمہوریت جمہور کا نام ہے جو کہ مکمل نظام ہیں۔

اختر مینگل

مزید : کراچی صفحہ اول