لاہور میں بڑھتا ہوا ٹریفک کا اژدھام اور حل

لاہور میں بڑھتا ہوا ٹریفک کا اژدھام اور حل

  



مکرمی!میرے زمانہ طالب علمی میں ڈاکٹر محمد شفیق ایس پی ٹریفک ہوا کرتے تھے جو بعد ازاں ایڈیشنل آئی جی پنجاب کے عہدے سے ریٹائر ہوئے، ڈاکٹر شفیق بہت ہی ذی شعور شخصیت کے مالک تھے۔ لاہور میں ٹریفک کے بڑھتے ہوئے اژدھام کو بھاپنتے ہوئے انہوں نے کہا تھا کہ اگر حکومت،ٹریفک انجینئرنگ اور ترقیاتی ادارے ایل ڈی اے نے جامع منصوبہ بندی نہ کی تو کسی سڑک پر صرف اسی کو راستہ ملے گا جو طاقتور ہو گا۔آج بڑھتی ہوئی روڈ ٹریفک کو دیکھ لیں، واقعی طاقتور کے لئے الگ راستہ بنتا ہے۔ فیروز پور روڑ،جیل روڑ کو جب سے سگنل فری کیا گیاہے، اس کے مثبت نتائج سامنے آئے ہیں۔ اب ضرورت اس امر کی ہے کہ اورنج لائن ٹرین،جو رائے ونڈ روڈ علی ٹاؤن سے شروع ہو کر ملتان روڈ سے گزرتی ہوئی جی ٹی روڈ ڈیرہ گجراں پر اختتام پذیر ہوتی ہے، اس روٹ ان سڑکوں کو سگنل فری کیا جائے تو اس کے دور رس نتائج برآمد ہوں گے۔ ٹھوکر نیاز بیگ سے چوبرجی آتے ہوئے ملتان روڑ پر اعوان ٹاؤن،،بجلی گھر سٹاپ، اسی طرح سبزہ زار، لیاقت چوک جانے والا راستہ،سکیم موڑ سے سبزہ زار جانے والا راستہ اور موڑ سمن آباد کے بعد ایکسپریس وے، جو فیروز پور روڑ کو لنک کرتی ہے، ان چوکوں پر شہریوں کے غیر ذمہ دارانہ رویے سے ایسی ٹریفک جام ہوتی ہے کہ اللہ کی پناہ!لاہور ٹریفک پولیس کو سٹاف کی شدید کمی کا سامنا ہے۔ بہر حال اس صورت حال میں بھی ٹریفک وارڈنز جو ڈیوٹی سر انجام دے رہے ہیں، وہ تعریف کے قابل ہیں۔ مَیں حکومت پنجاب، ایل ڈی اے،پلاننگ ایند ڈویلپمنٹ بورڈ پنجاب کے ذمہ داران سے عوامی مفاد عامہ میں التجا کرتا ہوں کہ وہ ملتان روڑ،جی ٹی روڑ کو سگنل فری بنانے کے لئے اقدامات کریں۔ اس کے علاوہ سٹی ٹریفک پولیس میں نئے ٹریفک وارڈنز کو بھرتی کریں۔ سی ٹی او لاہور کیپٹن (ر)ملک لیاقت سے استدعا ہے کہ ملتان روڑ کے اعوان ٹاؤن،بجلی گھر،سکیم موڑ اور گندہ نالہ چوک پر ٹریفک وارڈنز کو رات کے وقت ضرور تعینات کریں، تاکہ ٹریفک کا بہاؤ چلتا رہے۔ملتان روڈ پر اعوان ٹاؤن پوائنٹ عوام کے لئے درد سر بنا ہوا ہے۔

لاہور میں فیروز پور روڈ پراچھرہ سے شمع سٹاپ اور لٹن روڈ پر درمیان میں لوہے کا جنگلہ لگانے سے ٹریفک کی روانی میں جو رکاوٹ تھی،وہ بالکل ختم ہو گئی ہے۔ ہماری اعلیٰ حکام سے گزارش ہے کہ اس وقت لوئر مال روڈپر سنٹرل ماڈل ہائی سکول سے داتا دربار چوک تک لوگوں کے سڑک کے دونوں اطراف گزرنے سے ٹریفک کے بہاؤ میں بہت ہی مشکلات ہیں، اس کا حل بھی یہی ہے کہ سنٹرل ماڈل ہائی سکول سے داتا دربار چوک تک سڑک کے درمیان لوہے کا آہنی جنگلہ لگایا جائے اور پبلک کے گزرنے کے لئے اوورہیڈ برج بنائے جائیں۔ ان شاء اللہ ٹریفک کی روانی میں رکاوٹ کا یہ مسئلہ کافی حد تک حل ہو جائے گا۔ اسی طرح نیازی چوک اوور ہیڈ برج سے میٹروبس سٹاپ تک درمیان میں لوہے کا آہنی جنگلہ لگائیں تو لاہور میں داخل ہوتے وقت ٹریفک کی روانی متاثر نہیں ہو گی، لہٰذا نیازی چوک پر لوگوں کی آمدورفت کے لئے دو جگہوں پر اوور ہیڈ برج بنائے جائیں۔(چودھری فرحان شوکت ہنجرا، لاہور)

مزید : رائے /اداریہ


loading...