پنجاب میں ماحولیاتی تبدیلیوں سے متعلق پالیسی تشکیل دینے کی منظوری

      پنجاب میں ماحولیاتی تبدیلیوں سے متعلق پالیسی تشکیل دینے کی منظوری

  



لاہور(جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے ماحولیاتی تبدیلیوں سے متعلق صوبائی پالیسی تشکیل دینے کا اصولی فیصلہ کرتے ہوئے پالیسی مرتب کرنے کی منظوری دیدی۔تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ کے زیر صدارت پنجاب انوائرنمینٹل پروٹیکشن کونسل کا اجلاس منعقد ہوا۔اجلاس میں صوبے میں ماحول کی صورتحال سے متعلق جامع رپورٹ تیار کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب میں ماحولیاتی انڈومنٹ فنڈبھی قائم کیا جائے گا اورائیر کوالٹی انڈکس کے معیارکے تعین کاباقاعدہ جائزہ لیا جائے گا۔وزیراعلیٰ نے ائیر کوالٹی انڈکس کے تعین کیلئے خصوصی کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ لوگوں کو صاف فضا میں سانس لینے کا حق لوٹانا چاہتے ہیں۔ ماحولیاتی معیار کا تعین حقیقت پسندانہ ہونا چاہیئے۔انہوں نے کہا کہ ماحولیاتی تبدیلیوں سے نمٹنے کیلئے ماہرین کی مشاورت کو اہمیت دی جائے گی کیونکہ یہ ایک حساس معاملہ ہے، جس سے نبردآزما ہونے کے حوالے سے غفلت یا کوتاہی قطعاً برداشت نہیں کی جاسکتی۔وزیر اعلی عثمان بزدار نے کہا کہ ماضی میں ماحولیات کو نظر انداز کر کے مجرمانہ غفلت کا مظاہرہ کیا گیا اور بے دریغ عمارتیں، پل اور کنکریٹ کے سٹرکچر کھڑے کرکے درختوں کو بے رحمی سے کاٹا گیا جس سے ماحول کو بے پناہ نقصان پہنچا اورہمیں اب اس کا خمیازہ ماحولیاتی آلودگی اور سموگ کی صورت میں بھگتنا پڑ رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنی نسلوں کو صاف ستھرا ماحول فراہم کرنا ہے اور اس مقصد کیلئے ہر چیلنج کا مقابلہ کرنا ہے اور صورتحال کا مداوا کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب انوائرنمینٹل پروٹیکشن کونسل کا اجلاس باقاعدگی سے منعقد کیا جائے گا۔اجلاس میں ماحولیات کے ماہرین،سائنسدانوں اورمتعلقہ سرکاری محکموں کے سربراہان نے سفارشات اورتجاویز پیش کیں۔ایک دوسرے اجلاس میں سمال اینڈ میڈیم انٹرپرائزز ڈویلپمنٹ کیلئے نئی قرضہ سکیم شروع کرنے کی منظوری دی گئی۔سکیم کے تحت نئے کاروبار یا موجودہ کاروبار کیلئے آسان شرائط پر قرضہ فراہم کیا جائے گا۔سکیم کے تحت50لاکھ روپے تک کا قرضہ لیا جاسکے گا۔مرد اورخواتین کے ساتھ خواجہ سراء بھی قرضہ سکیم سے استفادہ کرسکیں گے۔قرضہ مینوفیکچرنگ،سروسز اورٹریڈنگ کے شعبوں کیلئے دیا جائے گا۔بینک آف پنجاب قرضہ سکیم کے اجراء کے حوالے سے پنجاب سمال انڈسٹریزکارپوریشن سے تعاون کرے گا۔اجلاس میں کاٹیج انڈسٹری کے فروغ کیلئے بھی قرضہ سکیم کے آغاز کی منظوری دی گئی۔اس سکیم کے تحت ایک لاکھ سے تین لاکھ روپے تک کا قرضہ آسان شرائط پر دیا جائے گا۔وزیراعلیٰ عثمان بزدارنے قرضہ سکیموں سے متعلقہ ضروری امور جلد نمٹانے کی ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ قواعد و ضوابط کے تحت اہم امور طے کر کے سکیموں کو جلد لانچ کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ آسان شرائط پر قرضوں کی فراہمی سے صوبے کی صنعت ترقی کرے گی۔ نوجوان نہ صرف ہنر سیکھیں گے بلکہ انہیں روزگار بھی ملے گا۔انہوں نے کہا کہ سرمائے کی کمی کے باعث کاروبار کو وسعت نہ دینے والی صنعتوں کو ان قرضہ سکیموں سے بہت فائدہ ہوگا۔اجلاس کے دوران قرضہ سکیم کا نام ”پنجاب روزگار“رکھنے کی تجویزپر غور کیاگیا۔ منیجنگ ڈائریکٹر پنجاب سمال انڈسٹریز کارپوریشن نے سمال اینڈ میڈیم انٹرپرائزز لون پروگرام کے اہم خدوخال کے بارے میں بریفنگ دی۔بعدازاں ایک بیان میں وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہا ہے کہ قومی اسمبلی کے بعد سینیٹ سے بھی سروسز ایکٹ ترمیمی بل کی منظوری خوش آئند ہے۔قومی ایشو پر سیاسی قوتوں کا یکساں موقف جمہوریت کی فتح ہے۔ بل کی منظوری سے یکجہتی اور اتفاق کا پیغام گیا ہے اور سیاسی جماعتوں نے بالغ نظری کا مظاہرہ کرکے ذمہ داری کا ثبوت دیا ہے۔اہم امور پر حکومت اور اپوزیشن ایک پیج پر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی ترقی اور عوام کی خوشحالی یگانگت،یکجہتی اور اتحاد میں مضمر ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے دور اندیشی اور اور فہم و فراست سے اہم معاملے کو بہترین طریقے سے حل کیا ہے۔آئندہ بھی قومی معاملات ہم آہنگی سے آگے بڑھائے جائیں گے۔علاوہ ازیں وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے واہ کینٹ میں ذہنی طور پر معذور 13 سالہ لڑکی سے بداخلاقی کے واقعہ پر ایک بیان میں کہا کہ بداخلاقی کا نشانہ بننے والی معذورلڑکی کے لواحقین کو انصاف کی فراہمی یقینی بنائیں گے۔ 

سردار عثمان بزدار

مزید : صفحہ اول