ایس بی سی اے کی نااہلی،اینٹی کرپشن غیر قانونی تعمیرات کیخلاف سرگرم

ایس بی سی اے کی نااہلی،اینٹی کرپشن غیر قانونی تعمیرات کیخلاف سرگرم

  



کراچی (رپورٹ /ندیم آرائیں)سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کی نااہلی اور افسران کی رشوت خوری نے محکمہ اینٹی کرپشن کو از خود غیر قانونی تعمیراتی کام کے حوالے سے کارروائیوں پر مجبور کردیا ہے۔اینٹی کرپشن حکام نے اورنگی ٹاؤن کے علاقے میں قائم غیر قانونی شادی ہالوں کے مالکان کو متعلقہ اجازت ناموں کے ہمراہ تحقیقات کے لیے طلب کرنے کے نوٹس جاری کردیئے تاہم ہال مالکان ایس بی سی اے کے راشی افسران کی ہدایت پر محکمہ اینٹی کرپشن کے سامنے پیش ہونے سے گریزکررہے ہیں۔ آئندہ چند روزمیں اینٹی کرپشن کی جانب سے اورنگی ٹاؤن میں قائم غیر قانونی شادی ہالوں کے حوالے سے بڑی کارروائی کا امکان ہے۔تفصیلات کے مطابق شہر قائد میں ایس بی سی اے کی سرپرستی میں مختلف علاقوں میں غیر قانونی تعمیرات کا سلسلہ عروج پر پہنچ گیا ہے۔ادارے کے بائی لاز کی خلاف ورزی کرتے ہوئے بھاری رشوت کے عوض شہر میں ہر قسم کی تعمیرات کی اجازت دے دی گئی ہے،جس کے باعث لاکھوں افراد کی جانوں کو خدشات پیدا ہوگئے ہیں۔گزشتہ دنوں رنچھوڑ لائن کے علاقے میں بھی ایک ایسی عمارت زمین بوس ہوگئی ایس بی سی اے کے بائی لاز کو نظر انداز کرکے بنائی گئی تھی۔ذرائع کے مطابق ایس بی سی اے کی جانب سے قوانین کی مسلسل خلاف ورزی کے بعد سندھ کا محکمہ اینٹی کرپشن متحرک ہوگیا ہے اور اس نے شہرمیں ہونے والی غیر قانونی تعمیرات کے حوالے سے کارروائیاں کرنا شروع کردی ہیں۔قانونی طور پر کسی بھی غیر قانونی تعمیر پر محکمہ اینٹی کرپشن کسی سائل کی شکایت پر ایس بی سی اے حکام سے متعلقہ اراضی پر تعمیرات کے حوالے سے سوال کرتا ہے تاہم ایس بی سی اے حکام محکمہ اینٹی کرپشن سے تعاون کے لیے تیار نہیں ہیں۔ایس بی سی اے کی ہٹ دھرمی کے بعد اینٹی کرپشن حکام نے اورنگی ٹاؤن کے علاقے میں قائم غیر قانونی شادی ہالز کے مالکان کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے انہیں پوچھ گچھ کے لیے طلب کیا  تھا۔ذرائع نے بتایا کہ اینٹی کرپشن کے نوٹسز ملنے کے بعد ان شادی ہال مالکان میں کھلبلی مچ گئی اور انہوں نے اپنے سرپرست ایس بی سی اے افسران سے رابطہ کیا اور انہیں ان نوٹسز کے حوالے سے آگاہ کیا۔ایس بی سی اے کے افسران نے شادی ہال مالکان کو محکمہ اینٹی کرپشن کے سامنے پیش ہونے سے روک دیا کیونکہ اس ان کے غیر قانونی سرگرمیوں کا پول کھل سکتا تھا۔ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ اب تک صرف چند ہی شادی ہال مالکان محکمہ اینٹی کرپشن کے سامنے پیش ہوئے ہیں اور ان سے متعلقہ کاغذات طلب کیے گئے وہ اسے پیش کرنے میں ناکام رہے ہیں۔اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ شادی ہال مالکان نے اینٹی کرپشن حکام کے سامنے جو اجازت نامے پیش کیے ہیں ان میں ایس بی سی اے کی جانب سے صرف کمرشل گراؤنڈ پلس ون تعمیرات کی اجازت دی گئی ہے۔ذرائع نے بتایا کہ آئندہ چند روزمیں اینٹی کرپشن کی جانب سے اورنگی ٹاؤن میں قائم غیر قانونی شادی ہالوں کے حوالے سے بڑی کارروائی کا امکان ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر